تیسرے ٹیسٹ میچ میں اظہر علی سینچری کی جانب گامزن

اظہر علی تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے مابین تیسرے اور آخری کرکٹ ٹیسٹ میچ میں بارش کی مداخلت کے بعد اظہر علی اور بابر اعظم نے عمدہ شراکت قائم کر کے پاکستان کو اچھا پلیٹ فارم فراہم کر دیا ہے۔

ڈومینیکا کے ونڈزر سٹیڈیم میں کھیلے جانے والے اس میچ کے پہلے دن کھیل کے اختتام پر پاکستان نے پہلی اننگز میں دو وکٹوں کے نقصان پر 169 رنز بنا لیے تھے۔

* میچ کا تفصی

جب کھیل ختم ہوا تو اظہر علی 85 جب کہ اپنا آخری ٹیسٹ کھیلنے والے یونس خان دس رنز بنا کر ناٹ آؤٹ تھے۔

بدھ کو ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر پاکستان کو پہلے کھیلنے کی دعوت دی تو اظہر علی اور شان مسعود نے اننگز کی ابتدا کی۔

19 کے سکور پر پاکستان کو پہلا نقصان اٹھانا پڑا جب شان مسعود کو راسٹن چیز نے آؤٹ کر دیا لیکن اس کے بعد اظہر علی اور بابر اعظم نے کھانے کے وقفے تک پراعتماد بیٹنگ کی اور کھانے کے وقفے پر ٹیم کا سکور 70 رنز تک لے گئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption بابر اعظم پچھلے میچ کی دونوں اننگز میں صفر پر آؤٹ ہونے کے بعد اس میچ میں نصف سنچری بنانے میں کامیاب رہے

گذشتہ میچ میں دونوں اننگز میں صفر پر آؤٹ ہونے والے بابر اعظم نے اچھی بلے بازی کی اور نصف سنچری بنائی۔ وہ 55 رنز بنا کر جوزف کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔ اظہر اور بابر نے دوسری وکٹ کی ساجھے داری میں 120 رنز جوڑے۔

پاکستان کے لیے یہ میچ نہ صرف اس لیے اہم ہے کہ اس میں فتح کی صورت میں وہ پہلی بار ویسٹ انڈیز کو اس کی سرزمین پر ٹیسٹ سیریز میں شکست دینے میں کامیاب ہو گا۔

یہ میچ پاکستان کے کپتان مصباح الحق اور پاکستان کی جانب سے سب سے زیادہ رنز اور سنچریاں بنانے والے بیٹسمین یونس خان کے کریئر کا آخری میچ ہے۔

اس میچ کے لیے ویسٹ انڈیز کی ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے جبکہ پاکستان نے ٹیم میں دو تبدیلیاں کی ہیں۔

بولر حسن علی کو لیگ سپنر شاداب خان کی جگہ ٹیسٹ ڈیبو کرایا گیا ہے جبکہ اوپننر احمد شہزاد کی طبیعت خراب ہونے کی وجہ سے ان کی جگہ اوپنر شان مسعود کو ٹیم میں جگہ ملی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption سیریز کا فیصلہ کن میچ پاکستان کے کپتان مصباح الحق اور بیٹسمین یونس خان کے کرئیر کا آخری میچ ہے

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں