ڈومینیکا ٹیسٹ: پاکستان کی اننگز 376 پر سمٹ گئی

ڈومینیکا کے ونڈزر سٹیڈیم میں کھیلے جانے والے تیسرے اور آخری کرکٹ ٹیسٹ میچ کے دوسرے دن پاکستان کی پوری ٹیم 376 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی جس کے جواب میں ویسٹ انڈیز نے کھیل کے اختتام تک بغیر کسی نقصان کے 14 رنز بنا لیے۔

ویسٹ انڈیز کی جانب سے کائرن پاول اور کریگ بریتھویٹ نے اننگز کا آغاز کیا اور علی الترتیب نو اور پانچ رنز بنا کر ناقابلِ شکست رہے۔

اس سے قبل چائے کے وقفے کے دونوں طرف اوپر تلے وکٹیں گرنے کے بعد وکٹ کیپر بیٹسمین سرفراز احمد نے عمدہ بیٹنگ کی اور 51 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ انھوں نے نویں وکٹ کے لیے محمد عباس کے ساتھ 44 رنز جوڑے۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

تیسرے ٹیسٹ میچ میں اظہر علی سینچری کی جانب گامزن

مزاج مختلف لیکن ایک جیسے حالات

276 کے سکور پر اسد شفیق کے 17 رنز بنا کر آؤٹ ہونے کے بعد پاکستان کی وکٹیں تیزی سے گریں اور صرف 48 رنز پر چار پاکستانی بلے باز پویلین لوٹ گئے۔

مصباح الحق 311 رنز پر آؤٹ ہوئے۔ انھوں نے ریسٹن چیز کی گیند پر پہلے چھکا لگایا لیکن پھر وہ ریورس سویپ کرنے کی کوشش میں وکٹ کیپر ڈاؤرچ کو کیچ تھما بیٹھے۔ انھوں نے 59 رنز بنائے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption سرفراز احمد نے تیز کھیلتے ہوئے عمدہ نصف سینچری سکور کی

اس کے بعد 322 کے سکور پر محمد عامر ہولڈر کی گیند پر بولڈ ہوئے، پھر اگلی ہی گیند پر یاسر شاہ سلپ میں کیچ آؤٹ ہو گئے۔

آج کے کھیل کی خاص بات اظہر علی کی عمدہ بیٹنگ تھی جنھوں نے آٹھ چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 127 رنز سکور کیے۔

میچ کے دوسرے دن پاکستان کے آؤٹ ہونے والے پہلے بیٹمسین یونس خان تھے، وہ 18 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

میزبان ٹیم کی جانب سے ریسٹن چیز نے چار، ہولڈر نے تین، بشو نے دو، جب کہ جوزف نے ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

بدھ کو شروع ہونے والے اس ٹیسٹ میچ میں ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر پاکستان کو پہلے کھیلنے کی دعوت دی تھی۔

پاکستان کے لیے یہ میچ نہ صرف اس لیے اہم ہے کہ اس میں فتح کی صورت میں وہ پہلی بار ویسٹ انڈیز کو اس کی سرزمین پر ٹیسٹ سیریز میں شکست دینے میں کامیاب ہو گا۔

یہ پاکستان کے کپتان مصباح الحق اور یونس خان کے کریئر کا آخری میچ ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں