مصباح الحق اور یونس خان نے پاکستانی کرکٹ کو تنگ گلی سے نکالا: رمیز راجہ

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان رمیز راجہ کا کہنا ہے کہ مصباح الحق اور یونس خان دو ایسے کھلاڑی ہیں جنہوں نے پاکستان کی کرکٹ کو تنگ گلی سے نکال کر اکٹھا کیا اور اسے استحکام دیا۔

رمیز راجہ نے ڈومینیکا سے بی بی سی کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ مصباح الحق کی سب سے بڑی کامیابی یہ ہے کہ انہوں نے پاکستان کی کرکٹ کو سپاٹ فکسنگ کے بھنور سے نکالا۔

پاکستان نے ویسٹ انڈیز کی سرزمین پر ٹیسٹ سیریز جیت کر تاریخ رقم کر دی

الوداع مصباح، الوداع یونس

مصباح اور یونس ستارے نہیں، استعارے تھے

رمیز راجہ کا کہنا ہے کہ مصباح الحق کے کھیلنے کے انداز سے یقیناً بہت سے لوگوں کو اختلاف ہوسکتا ہے لیکن کھیل سے ان کی غیرمعمولی وابستگی اور دیانت داری سے کوئی بھی اختلاف نہیں کرسکتا اور درحقیقت انہوں نے ایک ٹوٹی پھوٹی ٹیم کو اپنے پیروں پر کھڑا کیا۔

رمیز راجہ کا کہنا ہے کہ یونس خان نے اپنے کیریئر میں متعدد یادگار اننگز کھیلی ہیں جس میں ان کی سری لنکا کے خلاف کراچی ٹیسٹ میں ٹرپل سنچری بھی شامل ہے لیکن ذاتی طور پر وہ یونس خان کی انگلینڈ کے خلاف اوول ٹیسٹ میں ڈبل سنچری کو اس اعتبار سے غیرمعمولی اننگز سمجھتے ہیں کہ یہ اننگز انتہائی مشکل حالات میں انہوں نے کھیلی تھی جب ٹیم بھی سیریز میں دو ایک کے خسارے میں تھی اور خود یونس خان پر بھی بہت زیادہ دباؤ تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

رمیز راجہ کا کہنا ہے کہ مصباح الحق اور یونس خان کا خلا آسانی سے پر نہیں ہوگا کیونکہ پاکستان کی ٹیسٹ ٹیم میں آج ہم جو استحکام دیکھ رہے ہیں وہ ان دونوں کی وجہ سے ہے۔

ان کے مطابق دونوں نے اپنے وسیع تجربے کے مطابق مشکل صورتحال میں قابل ذکر اننگز کھیلیں اور اپنی پارٹنرشپ سے بھی ٹیم کو فائدہ پہنچایا۔

رمیز راجہ نے کہا کہ دونوں کے جانے کے بعد اب بیٹنگ آرڈر کو ازسر نو ترتیب دینا ہوگا کیونکہ اس وقت پاکستان کے پاس بیٹنگ کے زیادہ آپشنز موجود نہیں ہیں اور ٹیلنٹ کم نظر آرہا ہے۔

رمیز راجہ نے یونس خان کی سلپ فیلڈنگ کا خاص طور پر ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یہ خلا پر کرنا بہت ہی مشکل ہو گا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں