کرنل (ر) عبدالجبار ایورسٹ سر کرنے والے چوتھے پاکستانی بن گئے

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption کرنل (ر) عبدالجبار پنجاب سے تعلق رکھنے والے پہلے کوہ پیما ہیں جنھوں نے ماؤنٹ ایورسٹ کو سر کیا ہے

پاکستانی فوج کے سابق کرنل عبدالجبار بھٹی دنیا کے سب سے اونچے پہاڑ ماؤنٹ ایورسٹ کی چوٹی پر پہنچنے والے چوتھے پاکستانی بن گئے ہیں۔

انھوں نے یہ کارنامہ اتوار کو سرانجام دیا ہے۔

٭

٭ ایورسٹ کے بیس کیمپ سے تین دن دور

٭ ایورسٹ ڈائری: کھمبو گلیشیئر پر

٭ پاکستانی کوہ پیما حسن سدپارہ چل بسے

الپائن کلب کے مطابق عبدالجبار بھٹی مقامی وقت کے مطابق دوپہر ڈھائی بجے چوٹی پر پہنچے اور چوٹی سر کرنے کے بعد وہ نیچے کیمپ 3 کے لیے روانہ ہو گئے ہیں۔

عبدالجبار بھٹی سے قبل نذیر صابر، حسن سدپارہ اور ثمینہ بیگ ماؤنٹ ایورسٹ سر کر چکے ہیں۔

ان تینوں افراد کا تعلق گلگت بلتستان سے تھا اور کرنل(ر) بھٹی پنجاب سے تعلق رکھنے والے پہلے پاکستانی ہیں جنھیں یہ اعزاز حاصل ہوا ہے۔

اس سے قبل کرنل عبدالجبار نے پاکستان کی کئی بلند ترین چوٹیاں سر کر رکھی ہیں۔

8848 میٹر بلند ماؤنٹ ایورسٹ نیپال میں واقع ہے اور اسے سر کرنا دنیا کے تمام کوہ پیما کا خواب ہوتا ہے۔

پاکستان کی جانب سے ایک اور کوہ پیما سعد محمد بھی رواں برس ایورسٹ سر کرنے کی مہم پر ہیں اور اگر وہ اس کوشش میں کامیاب رہے تو یہ پہلا موقع ہوگا کہ دو پاکستانی

سب سے پہلے ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے والے پاکستانی نذیر صابر تھے جنھوں نے سنہ 2000 میں یہ کارنامہ انجام دیا تھا۔

11 برس بعد حسن سدپارہ ایورسٹ کی چوٹی تک پہنچنے والے دوسرے پاکستانی بنے تھے اور دو برس بعد ثمینہ بیگ نے یہ چوٹی سر کرنے والی پہلی پاکستانی خاتون ہونے کا اعزاز حاصل کیا تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں