’ٹائیگر وڈز گاڑی میں سو رہے تھے‘

ٹائیگر وڈز تصویر کے کاپی رائٹ Alamy
Image caption پولیس کی جانب سے حراست کے بعد ٹائیگر وڈز کی یہ تصویر جاری کی گئی

امریکی میڈیا نے کہا ہے کہ گالف کے شہرہ آفاق کھلاڑی ٹائیگر وڈز کو جب گرفتار کیا تو وہ اپنی گاڑی میں سٹیئرنگ ویل پر سو رہے تھے اور گاڑی کا انجن چل رہا تھا۔

پیر کی صبح سابق عالمی نمبر ایک اپنی مرسیڈیز گاڑی میں سڑک پر سوتے ہوئے پائے گئے، اور پولیس نے آ کر انھیں جگایا۔

وڈز پر نشے کی حالت میں گاڑی چلانے کا الزام عائد کیا گیا ہے، تاہم وڈز نے اس کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ انھوں نے شراب نہیں پی رکھی تھی بلکہ ایک دوا لی تھی جس کا ری ایکشن ہوا ہے۔

امریکی میڈیا نے پولیس کی ایک رپورٹ شائع کی ہے جس کے مطابق وڈز کی زبان لڑکھڑا رہی تھی اور وہ گھبرائے ہوئے تھے۔

ان کی سانس کے تجزیے سے پتہ چلا کہ وہ سہارے کے بغیر چلنے کے قابل نہیں تھے، البتہ ان کی سانس میں الکوحل کے آثار نہیں ملے۔

ٹائیگر وڈز کا کہنا ہے کہ پیر کے روز فلوریڈا میں ڈرائیونگ کے دوران ان کی گرفتاری کی وجہ شراب نہیں تھی۔

ٹائیگر وڈز پر نشہ آور اشیا کے استعمال کے بعد ڈرائیونگ کرنے کا الزام لگا تاہم ان کا کہنا ہے کہ یہ ڈاکٹر کی تجویز کردہ دوا کا غیر معمولی ری ایکشن تھا۔

انھوں نے کہا 'میں نے جو کیا میں اس کی شدت کو سمجھتا ہوں اور اپنے فعل کی پوری ذمہ داری لیتا ہوں۔'

جوپیٹر کے دیہی علاقے میں پولیس نے جب وڈز کو حراست میں لیا تو ان کی تصویر بھی کھینچی۔ جس میں وہ بےترتیب دکھائی دیے۔

اپنے بیان میں وڈز کا کہنا ہے کہ 'میں چاہتا ہوں کہ لوگوں کو معلوم ہو کہ میں نے شراب نوشی نہیں کی تھی، جو ہوا وہ تجویز کردہ دوا کا غیر معمولی ری ایکشن تھا۔'

'مجھے معلوم نہیں تھا کہ دواؤں کا مجھ پر اتنا زیادہ اثر ہو گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

انھوں نے اپنے اہلِ خانہ، دوستوں اور مداحوں سے معافی بھی مانگی اور کہا کہ وہ خود سے بھی بہت توقعات رکھتے ہیں۔

پولیس ریکارڈ کے مطابق 41 سالہ وڈز کو گرینج کے مقامی وقت کے مطابق صبح سات بجے جیوپٹر سے گرفتار کیا گیا۔ انھیں گرفتاری کے ساڑھے ساڑھے سات گھنٹوں بعد پالم بیچ کاؤنٹی کی جیل سے رہا کیا گیا۔

ریکارڈ کے مطابق انھیں اس تحریری یقین دہانی کے بعد رہائی ملی جس میں انھوں نے وعدہ کیا تھا کہ وہ مستقبل کی قانونی کارروائی میں بھی مکمل تعاون کریں گے۔

یاد رہے کہ وڈز کی کمر کی سرجری ہوئی تھی اور گرفتاری سے قبل آنے والے بیانات میں انھوں نے کہا تھا کہ وہ بہت تکلیف سے گزرے ہیں اورحالیہ برسوں میں ان کی صحت اچھی نہیں رہی۔

14 بار گالف کے چیمپئین رہنے والے وڈز پر سنہ 2009 میں بھی ڈرائیونگ کے دوران غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کرنے پر سزا ملی تھی۔

بعد میں انھوں نے غیر ازدواجی تعلقات قائم کرنے پر عوام سے معافی مانگی تھی۔ ان سکینڈلز کی وجہ سے انھیں بہت سے سپانسرز سے بھی ہاتھ دھونے پڑے تھے اور انھوں مقابلوں میں حصہ لینے کے بجائے کریئر میں بریک بھی لیا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں