’انڈین کرکٹرز میں دباؤ سے نمٹنے کی صلاحیت زیادہ‘

انڈین ٹیم تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption انڈین ٹیم نے پاکستان کے خلاف بین الاقوامی ٹورنامنٹس میں زیادہ کامیابیاں حاصل کی ہیں

ورلڈ کپ ہو یا ورلڈ ٹی ٹوئنٹی، پاکستان اور انڈیا کے درمیان کھیلے گئے میچوں میں جیت ہمیشہ انڈیا کی رہی ہے البتہ چیمپیئنز ٹرافی میں پاکستان انڈیا کے خلاف کھیلے گئے تین میں سے دو میچ جیتنےمیں ضرور کامیاب ہوا ہے۔

آئی سی سی مقابلوں میں پاکستان کے انڈیاکے خلاف مجموعی طور پر مایوس کن نتائج کو دیکھتے ہوئے یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ کیا پاکستانی کرکٹرز بڑے میچوں میں انڈیا کے خلاف کھیلتے ہوئے نفسیاتی دباؤ کا شکار ہو جاتے ہیں؟۔

پاکستان کے پاس چیمپیئنز ٹرافی میں ہارنے کو کچھ نہیں: سرفراز احمد

چیمپیئنز ٹرافی میں پاکستان کا مایوس کن ریکارڈ

چیمپیئنز ٹرافی: حارث سہیل عمر اکمل کی جگہ پاکستانی سکواڈ میں شامل

عمر اکمل آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی سے باہر

پاکستان کے سابق ٹیسٹ کرکٹر بازید خان کا خیال یہ ہے کہ انڈین کرکٹرز میں پاکستانی کرکٹرز کے مقابلے میں دباؤ سے نمٹنے کی صلاحیت زیادہ ہے۔

بازید خان بی بی سی کو دیے گئے انٹرویو میں اس کی وجہ یہ بیان کرتے ہیں ’انڈیا میں کرکٹ کو بے انتہا مقبولیت حاصل ہے اور اسی مقبولیت کے سبب انڈیا کے کروڑوں شائقین کی اپنے کرکٹرز سے بے پناہ توقعات وابستہ ہوتی ہیں۔ درحقیقت یہی وہ زبردست دباؤ ہوتا ہے جس کا سامنا انڈیا کے صرف بڑے کرکٹرز ہی کو نہیں بلکہ ایک عام سے کرکٹر کو بھی کرنا پڑتا ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ PTV
Image caption انڈین کرکٹرز کو آئی پی ایل سے بہت فائدہ ہوا ہے: بازید خان

بازید خان کا کہنا ہے کہ انڈین کرکٹرز کو آئی پی ایل سے بھی بہت فائدہ ہوا ہے اور انھیں پریشر گیم کھیلنے کا کافی تجربہ ہوچکا ہے لہٰذا جب وہ روایتی حریف پاکستان کے سامنے آتے ہیں تو ان کی تیاری پاکستانی ٹیم کے مقابلے میں زیادہ بہتر ہوتی ہے خاص کر دباؤ کا مقابلہ کرنے کے معاملے میں۔

بازید خان چیمپئنز ٹرافی میں پاکستان اور انڈیا کے درمیان ہونے والے میچ کے بارے میں کہتے ہیں ’پاکستانی ٹیم میں کئی نئے کھلاڑی موجود ہیں لہٰذا وہ پچھلی ناکامیوں کا بوجھ اپنے ساتھ لیے نہیں کھیلیں گے بلکہ تازہ دم ہوکر میدان میں اتریں گے۔‘

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کا بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ وہ آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی میں خود پر کوئی دباؤ محسوس نہیں کر رہے ہیں البتہ وہ چاہتے ہیں کہ وہ اور ان کے دوسرے کھلاڑی اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کریں۔

ان کے مطابق وہ انڈیا کے خلاف پہلے میچ کے سلسلے میں بہت پرجوش ہیں اور پاکستانی ٹیم مکمل تیاری کے ساتھ میدان میں اترے گی۔

پاکستانی ون ڈے ٹیم کے سابق کپتان اظہر علی کے خیال میں انٹرنیشنل کرکٹ دراصل چیلنجز اور دباؤ ہی کا نام ہے۔

اظہر علی نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور انڈیا کے میچوں میں ہر کسی کے جذبات اپنے عروج پر ہوتے ہیں لیکن وہ چاہیں گے کہ اس میچ کو ایک عام انٹرنیشنل میچ سمجھ کر کھیلیں اور کھیل سے لطف اندوز ہوں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں