چیمپیئنز ٹرافی: ڈک ورتھ لوئس فارمولے کے تحت پاکستان کی 19 رنز سے جیت

فخر تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption اپنا پہلا ایک روزہ میچ کھیلنے والے فخر زمان نے پاکستان کو عمدہ آغاز فراہم کیا

انگلینڈ اور ویلز میں جاری آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی کے ساتویں میچ میں پاکستان نے جنوبی افریقہ کو شکست دے دی ہے۔

بارش سے متاثرہ اس میچ کا فیصلہ ڈک ورتھ لوئس فارمولے کے تحت ہوا اور پاکستان کو 19 رنز سے فاتح قرار دیا گیا۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

پاکستان کی چیمپیئنز ٹرافی میں پہلی جیت

'زخمی شیر' سے امید لگائے ایجبسٹن کے شائقین

عالمی رینکنگ خراب کارکردگی کی ڈھال کیوں؟

برمنگھم میں کھیلے گئے میچ میں جنوبی افریقہ نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے پاکستان کو فتح کے لیے 220 رنز کا ہدف دیا تھا۔ جواب میں بارش سے میچ کے متاثر ہونے تک پاکستان نے تین وکٹوں کے نقصان پر 119رنز بنا لیے تھے۔

حسن علی کو میچ میں تین وکٹیں حاصل کرنے اور دو اہم کیچ پکڑنے پر مین آف میچ قرار دیا گیا۔

چیمپیئنز ٹرافی میں پاکستان کا اگلا میچ کارڈف میں 12 جون کو سری لنکا سے ہو گا۔ اگر پاکستان یہ میچ جیتتا ہے تو اس کے سیمی فائنل تک پہنچنے کا امکانات بڑھ جائیں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

جنوبی افریقہ کی بیٹنگ

جنوبی افریقہ نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور ہاشم آملہ اور کوئنٹن ڈی کاک نے محتاط انداز میں اننگز شروع کی۔

پاکستان کی طرف سے اس میچ میں سپنر سے بولنگ کا آغاز نہ کروانے کا فیصلہ کیا گیا اور گیند محمد عامر اور جنید خان کو تھمائی گئی۔

جب آٹھ اووروں تک پاکستان کو وکٹ نہ مل سکی تو سرفراز نے بولنگ کی ذمہ داری عماد وسیم کو دی اور انھوں نے اوور کی دوسری ہی گیند پر ان فارم بیٹسمین ہاشم عاملہ کو ایل بی ڈبلیو آؤٹ کر دیا۔

جنوبی افریقہ کو رنز بنانے کے زیادہ مواقع نہیں ملے اور ٹیم پریشر میں نظر آئی۔

14ویں اوور میں اوپنر ڈی کاک نے چوکا مار کر رن ریٹ بڑھانے کی کوشش کی تو اوور کی آخری گیند پر محمد حفیظ نے انھیں بھی ایل بی ڈبلیو کر دیا۔

عماد وسیم نے جنوبی افریقہ کے کپتان اے بی ڈیویلیئرز کو صفر پر آؤٹ کیا تو جنوبی افریقی ٹیم مکمل طور پر دباؤ میں آگئی اور رن بنانے کی رفتار بالکل ہی سست ہوگئی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption حسن علی نے لگاتار دو گیندوں پر دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا

یہ پہلا موقع تھا کہ ڈیویلیئرز اپنے ون ڈے کیرئر میں پہلی ہی گیند پر آؤٹ ہوئے۔

پاکستانی کھلاڑیوں کی فیلڈنگ میں پھرتی اور اٹیکنگ گیم نے نہ صرف ٹیم کے حوصلے بلند کیے بلکہ شائقین بھی انتہائی گرمجوشی سے ہر اچھی گیند ہر فیلڈنگ پر تالیاں بجاتے رہے۔

سپنرز کے طویل سپیل کے بعد سرفراز نے حسن علی کو بولنگ دی اور انھوں نے اپنے پہلے ہی اوور کی دوسری ہی گیند پر فاف ڈوپلیسی کو بولڈ کر دیا۔

حسن نے ہی جے پی ڈومینی اور وین پارنل کو بھی پویلین کی راہ دکھائی۔

جہاں ایک جانب سے جنوبی افریقہ کی وکٹیں تواتر سے گر رہی تھیں وہیں دوسری جانب ڈیوڈ ملر کریز پر جمے رہے اور آہستہ آہستہ رنز بنانے کی کوشش کرتے رہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

انھوں نے 75 رنز کی ناقال شکست اننگز کھیلی اور ٹیم کا سکور 219 تک پہنچانے میں کلیدی کردار ادا کیا۔

پاکستان کی بیٹنگ

میچ میں شاندار بولنگ اور فیلڈنگ پرفارمنس کے بعد جب پاکستان نے جنوبی افریقہ کے 219 رنز کے جواب میں اپنی اننگز کا آغاز کیا تو احمد شہزاد کی جگہ ٹیم میں شامل کیے گئے نوجوان بلے باز فخر زمان نے شاندار بیٹنگ کرتے ہوئے پاکستان کو ایک بہتر آغاز فراہم کیا۔

فخر زمان نے آئی سی سی رینکنگ میں پہلے نمبر پر موجود بولر ربادا اور پارنل کو ایک ہی اوور میں دو دو چوکے مارے مگر اُن کی اننگز زیادہ دیر نہ چلی اور آٹھویں اوور میں مورکل کی ایک گیند پر سلپ میں کیچ آؤٹ ہوگئے۔

انھوں نے 23 گیندوں پر 31 رنز کی اننگز کھیلی۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC Sport
Image caption ہاشم آملہ جنوبی افریقہ کے آؤٹ ہونے والے پہلے کھلاڑی تھے

مورکل کے اسی اوور کی اگلی گیند پر اظہر علی بھی واپس پویلین پہنچ گئے۔ اوور کے اختتام پر پاکستان کا سکور 42 رنز تھا اور 2 وکٹیں گر چکی تھیں۔

اگلے بیٹسمین محمد حفیظ تھے جنھوں نے بابر اعظم کے ساتھ محتاط انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے تیسری وکٹ کی شراکت میں 50 رنز بنا کر اپنی ٹیم کی پوزشین مستحکم کر دی۔

محمد حفیظ 53 گیندوں پر ایک چھکے اور ایک ہی چوکے کی مدد سے 26 رنز کی اننگز کھیلنے کے بعد مورنے مورکل کی تیسری وکٹ بنے۔

جنوبی افریقہ کی جانب سے جہاں دیگر بولرز کو کوئی مدد نہیں مل رہی تھی وہیں مورنے مورکل انتہائی عمدہ بولنگ کرتے دکھائی دیے۔

جب بارش کی وجہ سے میچ رکا تو بابر اعظم اور شعیب ملک کریز پر موجود تھے اور ڈک ورتھ لوئیس نظام کے مطابق پاکستان فتح کے لیے درکار مقررہ سکور سے 19 رنز آگے تھا۔

بارش نہ رکنے پر امپائرز نے میچ ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے پاکستان کو فاتح قرار دے دیا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں