چیمپیئنز ٹرافی کے دوسرے سیمی فائنل میں انڈیا فاتح

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption انڈیا کے اوپنرز نے ایک مرتبہ پھر ہدف کے تعاقب کے لیے اپنی ٹیم کو اچھا پلیٹ فارم فراہم کیا

انگلینڈ اور ویلز میں کھیلی جانے والی آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی کے دوسرے سیمی فائنل میچ میں آج انڈیا نے بنگلہ دیش کو نو وکٹوں سے شکست دے کر فائنل کے لیے کوالیفائی کر لیا ہے۔

انڈیا اب اتوار کو فائنل میں پاکستان کا سامنا کرے گا۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

انڈیا نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کرنے کا فیصلہ کیا تو بنگلہ دیش نے انھیں کامیابی کے لیے 265 رنز کا ہدف دیا۔

اس ہدف کے تعاقب میں روہت شرما نے 123 اور کوہلی نے 96 رنز کی ناقابلِ شکست اننگز کھیلیں۔ روہت شرما مین آف دی میچ ٹھہرے۔

انڈیا کے آؤٹ ہونے والے واحد بلے باز شیکھر دھون تھے جو کہ 46 رنز بنا کر مشرفِ مرتضیٰ کی گیند پر کیچ ہوئے۔

اس سے قبل جب بنگلہ دیش کی اننگز کا آغاز ہوا تو پہلے اوور کی آخری گیند پر ہی بھوونیشور کمار نے اوپنر سومیا سرکار کو صفر کے سکور پر بولڈ کر دیا۔

بھوونیشور کمار نے انڈیا کو دوسری کامیابی اس وقت دلائی جب ساتویں اوور میں انھوں نے صابر رحمان کو آؤٹ کیا۔ ان کا کیچ رویندر جدیجا نے پکڑا۔

اس کے بعد تمیم اقبال اور مشفق الرحیم کی شراکت میں 123 رنز بنے۔ 153 کے مجموعی سکور پر کیدار جادھو نے تمیم اقبال کی وکٹ حاصل کی۔ انھوں نے 70 رنز بنائے۔

بنگلہ دیش کی گرنے والی چوتھی وکٹ شکیب الحسن کی تھی جو کہ 15 رنز بنا سکے۔ انھیں جدیجا نے آؤٹ کیا۔

شکیب الحسن کے آؤٹ ہونے کے اگلے اوور میں ہی بنگلہ دیش کی جانب سے دوسرے سیٹ بیٹسمین مشفق الرحیم بھی کیدار جادھو کی گیند پر آوٹ ہوگئے۔ ان کا انفرادی سکور 61 رہا۔

بنگلہ دیش کی چھٹی وکٹ اس وقت گری جب 218 کے مجموعی سکور پر مصدق حسین کو بھمرا نے 43ویں اوور میں اپنی ہی گیند پر کیچ آوٹ کیا۔

اس کے بعد محمود اللہ 45ویں اوور کی آخری گیند پر آؤٹ ہوئے جب ان کی ٹیم کا سکور 229 تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption تمیم اقبال نے پراعتماد بیٹنگ کرتے ہوئے نصف سنچری بنائی۔

ٹیموں کی عالمی رینکنگ بے معنی ہو گئی ہے

’فائنل میں انڈیا آئے یا بنگلہ دیش، مقابلے کے لیے تیار ہیں‘

انڈیا نے اس ٹورنامنٹ کا آغاز کامیابی سے کیا تھا اور اپنے پہلے میچ میں روایتی حریف پاکستان کو باآسانی 124 رنز سے ہرا دیا۔

تاہم اگلے میچ میں اسے سری لنکا نے ایک دھچکا دیا اور ان کے خلاف 322 کا ہدف حاصل کر لیا۔ تاہم انڈیا نے اپنے آخری میچ میں اس خفت کو مٹاتے ہوئے جنوبی افریقہ کو آٹھ وکٹوں سے مات دے کر سیمی فائنل کے لیے کوالیفائی کر لیا۔

اس سے پہلے انڈیا نے اب تک ماضی میں کھیلے گئے سات چیمپئنز ٹرافی ٹورنامنٹس میں سے تین دفعہ سیمی فائنل تک رسائی حاصل کی اور تینوں مرتبہ انھوں نے میچ جیت کر فائنل کے لیے کوالیفائی کیا۔

ان تین فائنلز میں سے ایک میں بارش کی وجہ سے اسے سری لنکا کے ساتھ مشترکہ طور پر فاتح قرار دیا گیا جبکہ 2013 میں انڈیا نے انگلینڈ میں ہی منعقدہ چیمپئنز ٹرافی کا فائنل میزبان ٹیم کو شکست دے کر جیتا تھا۔ تاہم پہلی چیمپئنز ٹرافی میں انڈیا فائنل میں نیوزی لینڈ سے ہار گیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption شکیب الحسن کے آؤٹ ہونے کے اگلے اوور میں ہی بنگلہ دیش کی جانب سے دوسرے سیٹ بیٹسمین مشفق الرحیم بھی کیدار جادھو کی گیند پر آوٹ ہوگئے۔ ان کا انفرادی سکور 61 رہا۔

یہ تیسرا موقع ہے جب بنگلہ دیش چیمپئنز ٹرافی ٹورنامنٹ کھیل رہا ہے اور اس سے پہلے چیمپیئنز ٹرافی ٹورنامنٹ کی تاریخ میں اس کا انڈیا سے آج تک کبھی سامنا نہیں ہوا۔

اس چیمپیئز ٹرافی میں بنگلہ دیش کا پہلا میچ میزبان انگلینڈ سے تھا جس میں اچھی بیٹنگ کے باوجود اسے ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔

آسٹریلیا کے خلاف اس کا میچ بغیر کسی نتیجے کے اختتام پذیر ہوا جس سے ملنے والے ایک پوائنٹ نے سیمی فائنل تک رسائی کے معاملے میں بنگلہ دیش کا بہت ساتھ دیا۔

سیمی فائنل تک پہنچنے کے لیے اسے نیوزی لینڈ کے خلاف میچ میں لازمی جیت درکار تھی جو اس نے حاصل کی اور پھر اس گروپ کے آخری میچ میں انگلینڈ کی آسٹریلیا کے خلاف جیت نے اس بات کو یقینی بنا دیا کہ بنگلہ دیش اپنی تاریخ میں پہلی بار کسی آئی سی سی ٹورنامنٹ کے سیمی فائنل تک پہنچ سکے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں