چیمپیئنز ٹرافی کے فائنل سے پہلے پاکستانی اور انڈین ٹوئٹر پر مدِمقابل

تصویر کے کاپی رائٹ PA AND VIRENDRA SEHWAG TWITTER HANDLE
Image caption آفریدی اور سہواگ نے اتوار کو انڈیا اور پاکستان کے درمیان ہونے والے فائنل میچ کے بارے میں ٹویٹ کیا

چیمپئنز ٹرافی کے سیمی فائنل میچ میں انڈیا کی بنگلہ دیش پر جیت کے بعد ہی ٹویٹر پر بحث ہونے لگی جس میں بھارت اور پاکستان کے درمیان اتوار کو ہونے والے فائنل میچ کے بارے میں بھی لوگ تبصرے کرنے لگے۔

پاکستان کے کرکٹر شاہد آفریدی نے اپنی ایک ٹویٹ میں لکھا: 'بھارت نے اچھے کھیل کا مظاہرہ کیا۔ اب کرکٹ کے سب سے بڑے میچ کا انتظار ہے۔ پاکستان کی ٹیم اپنا تحمل برقرار رکھے اور فوکس ہوکر کھیلے۔ بس ایک اور جیت۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

وقاص امجد نے آفریدی کی ٹویٹ پر جواب دیتے ہوئے لکھا: 'اس بار انشاء اللہ جیت پاکستان کی ہوگی۔ پاکستانی ٹیم پورے اعتماد سے پر ہے جبکہ بھارتی ٹیم حد سے زیادہ اعتماد کا شکار ہوچکی ہے۔'

سندیپ نام کے ٹویٹر صارف نے لکھا: 'پاکستان میں اچانک پرانے ٹی وی سیٹ کی فروخت میں اضافہ ہوا ہے تاکہ وہ انڈیا سے شکست کے بعد توڑنے کے کام آئیں۔'

سابق بھارتی کرکٹر وریندر سہواگ نے ٹویٹ کیا: 'اچھی کوشش کی پوتے۔ سیمی فائنل تک پہنچنے کے لیے بہترین کوششیں کیں۔ گھر کی ہی بات ہے۔ فادرز ڈے پر بیٹے کے ساتھ فائنل ہے۔ مذاق کو سنجیدہ مت لیجیے گا۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

سہواگ کی اس ٹویٹ سے جہاں بہت سے لوگوں نے لطف اٹھایا تو بہت سے افراد انھیں یہ مشورہ بھی دیتے نظر آئے کہ اتنے بڑے کرکٹر کی جانب سے اس طرح کا تبصرہ زیب نہیں دیتا ہے۔

بروکین کرکٹ کے ٹوئٹر ہینڈل سے لکھا گيا: 'چیمپئنز ٹرافی کی تاریخ میں انڈین ٹیم سب سے زیادہ بار فائنل میں پہنچنے والی ٹیم ہے۔‘

فلم اداکارہ تاپسی پنّوں نے لکھا ہے: 'انڈیا اور پاکستان کے داؤ پیچ سے زیادہ میں اس بات سے جوش میں ہوں کہ جس ملک نے ان دونوں کو کرکٹ کھیلنا سکھایا وہیں پر دونوں فائنل میچ کھیلنے جا رہے ہیں۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کے نقلچی اکاؤنٹ سے ٹویٹ کیا گیا: 'اب انڈین ٹیم کو ایک پریس کانفرنس کرکے بنگلہ دیش پر اپنی جیت کے ثبوت پیش کرنے چاہییں۔'

سیمی فائنل میں انڈین کرکٹ ٹیم کے کپتان وراٹ کوہلی اور بلے باز روہت شرما کی اچھی بیٹنگ کی بھی خوب تعریفیں ٹویٹر پر جاری رہیں۔

روہت شرما نے ناٹ آؤٹ 123 رنز بنائے جبکہ وراٹ کوہلی نے 96 رنز بنائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

یوگیشور ماتھر نام کے ٹوئٹر ہینڈل سے لکھا گیا: 'روہت اور کوہلی بنگلہ دیشی کھلاڑیوں کو ان کی صحیح جگہ دکھا رہے ہیں، وہ ہے باؤنڈری کے باہر کی جگہ۔'

سندیپ گوئل نے لکھا ہے کہ ایسا لگ رہا ہے کہ روہت اور کوہلی میں میچ کے دوران چوکے لگانے کا مقابلہ چل رہا ہو۔

سيپی شرما 94 کے ٹوئٹر ہینڈل سے لکھا گیا کہ 8،000 رن بنانے کے لیے وراٹ کوہلی کو مبارکباد، کسی بھی کھلاڑی سے زیادہ تیزی سے انھوں نے یہ رنز بنائے ہیں، صرف 175 اننگز میں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں