لڑکے اٹیک کرنے میں یقین رکھتے ہیں اور ہم نے اٹیک کرنے کا فیصلہ کیا ہے: مکی آرتھر

مکی آرتھر تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کوچ مکی آرتھر کا کہنا ہے کہ اس بار کوئی افسوس نہیں ہونا چاہیے جیسا کہ انڈیا کے ساتھ پہلے میچ میں ہوا تھا۔

انھوں نے آسٹریلوی کرکٹ ویب سائٹ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ فائنل تک پہنچنا ان کے لیے ناقابل یقین بات ہے اور وہ بھی پہلے میچ میں شکست کے بعد۔

انھوں نے کرکٹ ڈاٹ کام ڈاٹ اے یو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ان کے کھلاڑیوں نے میچوں کے لیے پوری تیاری کی اور انھوں نے جس معیار کے کھیل کا مظاہرہ کیا وہ قابل تعریف ہے۔

٭ پاکستان فائنل میں سرپرائز دے سکتا ہے

٭ پاکستانی ٹیم کی واپسی بہت شاندار رہی ہے: کوہلی

٭ فائنل سے پہلے پاکستانی اور انڈین ٹوئٹر پر مدِمقابل

ایک سوال کے جواب میں انھوں نے کہا کہ وہ انڈیا کے ٹاپ آرڈر کا نئی گيند سے شکار کریں گے اور مڈل آرڈر کو دباؤ میں ڈال دیں گے۔

انھوں نے کہا: 'ہمیں (اٹیک) کرنا پڑے گا۔ ہمارے پاس کوئی آپشن نہیں ہے۔ ہمیں کوشش کرنی ہے اور نئی بال کو ہمارے لیے کام انجام دینا ہے۔ ہمیں کوشش کرنی ہے اور انھیں آؤٹ کرنا ہے۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

انھوں نے مزید کہا: 'انڈیا کے مڈل آرڈر کو بہت زیادہ موقع نہیں ملا ہے اور حالیہ دنوں میں انھوں نے دباؤ میں بیٹنگ نہیں کی ہے۔ اس لیے ہم کوشش کریں گے کہ ان کے ٹاپ آرڈر کو آؤٹ کرکے انھیں انتہائی دباؤ میں لائیں۔ اگر ہم ایسا کرنے میں کامیاب رہتے ہیں تو ہم حقیقی معنوں میں ان کو نقصان پہنچا سکتے ہیں۔'

انھوں نے پوری پاکستان ٹیم، مینجمنٹ، کوچز کی تعریف کی اور کہا کہ ٹیم کے کھلاڑی کچھ کر دکھانے کے لیے بیتاب ہیں۔ 'لڑکے اٹیک کرنے میں یقین رکھتے ہیں اور ہم نے اٹیک کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption مکی آرتھر نے کہا کہ ان کے پاس اٹیک کرنے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں ہے

انھوں نے کہا کہ 'کپتان سرفراز احمد بہت مثبت ہیں۔ وہ ایک جارح کپتان اور وکٹیں لینا چاہتے ہیں ۔۔۔ انھوں نے کھلاڑیوں کو اٹیکنگ پوزیشن پر لگایا ہے، سلپ لگائی اور یہ ہمارے لیے سود مند ثابت ہوا ہے۔'

انھوں نے کہا کہ ٹیم کے ساتھ ساتھ پورے پاکستان میں فائنل کے لیے بڑا جوش ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں