اوول میں شائقین کا جذبہ جنون کی حد کو چھونے لگا

کرکٹ

اس بار بھی رمضان ہے اس بار بھی رمضان تھا۔ اس بار بھی ٹیم کا ٹورنامنٹ میں آغاز خراب ہوا اس بار بھی ایسا ہی تھا۔

اس بار انضمام تھا اس بار فخر زمان ہے۔ اوول کرکٹ گراؤنڈ میں آج ٹھیک ٹھاک گرمی ہے اور شائقین کا جذبہ جنون کی حد تک پہنچ چکا ہے۔

کرکٹ کا سب سے بڑا ٹاکرا: انڈیا اعزاز کا دفاع یا پاکستان تاریخ رقم کرے گا، فیصلہ آج

پاکستان بمقابلہ انڈیا، آپ کیا جانتے ہیں؟

پاکستان اور انڈیا کے درمیان چیمپیئنز ٹرافی کا فائنل ہے مگر بہت سوں کو اس گانے کا خیال آ رہا ہے۔

دی ورلڈ از کمنگ ڈاؤن، دی فلیگز آر اپ ہوز گونا بی نمبر ون ہوز گونا ٹیک آؤٹ دی کپ

ہو وانا بی، ہو از دی کنگ اٹس اے ونس ان اے لائف ٹائم چانس

ہو ول رول دی ورلڈ گاٹ ٹو سی ہو رولز دی ورلڈ

اس گانے کو سنے 25 سال ہوگئے ہیں لیکن اس کی یادیں آج بھی تازہ ہیں۔ ہر گلی کوچے میں چھوٹا بڑا گنگناتا پھرتا تھا۔ وہ پہلا ورلڈ کپ تھا جس میں رنگین کٹ اور وائٹ بال کا استعمال کیا گیا تھا۔

اس بار آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی کی کوریج کے دوران کئی پاکستانی شائقین سے ملا جو بینرز لیے گراؤنڈ میں پہنچے ہوئے تھے جن پر لکھا تھا اس بار بھی 92 کے کارنرڈ ٹائیگرز کی طرح پاکستان پھر جیتے گا۔ آج یہ جنون انتہا کو پہنچ گیا ہے۔

شائقین پر امید ہیں کہ 25سال بعد پاکستان ایک بار پھر ایک بڑے ون ڈے ٹورنامنٹ میں فاتح ہوگا۔

آج دو قسم کے شائقین آئے ہوئے ہیں جو خوشی سے پاگل ہوئے جا رہے ہیں کہ وہ اپنی ٹیم کو فائنل میں دیکھنے آئے ہیں اور دوسرے وہ جو پاگل ہوئے جا رہے ہیں کہ میچ کے لیے ٹکٹ کیسے حاصل کریں۔

یہاں لندن میں واٹس آپ پر لوگ ایک دوسرے کو ایک لطیفہ بھیج رہے ہیں جس میں لکھا ہے 'میرے ایک دوست کے پاس فائنل کے دو ٹکٹ ہیں اسے یہ نہیں پتا تھا کے فائنل اس کی شادی والے دن ہے۔ اگر آپ اُس کی جگہ لینا چاہتے ہیں تو 250 پاؤنڈ میں لے سکتے ہیں۔'

بس لوگ اتنا ہی پڑھ کر فوراً جواب بھیج دیتے ہیں میں تیار ہوں، تیار ہوں۔

اگلے جملے میں لکھا ہوتا ہے کہ ’شادی ہال لندن کے گریوزاینڈ میں ہے اور دلہن لال رنگ کا لہنگا پہنے تیار ہوگی'

یہ لطیفہ اس وقت کچھ شائقین کا جنون دیکھ کر زیادہ غلط نہیں لگتا ہے۔

انڈین شائقین کو پورا یقین ہے کہ جیت اُن ہی کی ہوگی۔ وہ بار بار یہ بات دہرا رہے ہیں کہ ہم آئی سی سی ٹورنامنٹ میں زیادہ جیتے ہیں۔

انڈین شائقین ڈھول کی تاپ پر بھنگڑے ڈال رہے ہیں اور ان کے سامنے کھڑے پاکستانی شائقین جیتے گا بھئی جیتے گا پاکستان کے نعرے بلند کر رہے ہیں۔

ہر طرف پاکستانی اور انڈین شائقین ہیں۔ گرمی اتنی ہے کہ لگ رہا ہے کہ یہ میچ شاید پاکستان یا انڈیا میں ہو رہا ہے۔

کون سے شائقین صحیح ثابت ہوتے ہیں اس کا فیصلہ تو اب میدان میں ہوگا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں