پاکستانی جیت پر میر واعظ اور گمبھیر کا ٹکراؤ

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں
پاکستان کی فتح پر کشمیر میں جشن

انگلینڈ کے اوول میدان پر منعقدہ چیمپیئنز ٹرافی کے فائنل میچ میں انڈیا کی شکست اور پاکستان کی کامیابی پر مداحوں میں تو تو میں میں جاری ہے۔

میچ سے پہلے انڈیا کے جو کرکٹ شائقین سوشل میڈیا پر جارحانہ نظر آ رہے تھے انھیں اب شدید طنز کا سامنا ہے۔

ایسی ہی ایک تکرار انڈین کرکٹر گوتم گمبھیر اور انڈیا کے زیر انتظام کشمیر کے علیحدگی پسند رہنما میر واعظ عمر فاروق کے درمیان نظر آئی۔

میر واعظ نے پاکستان کی جیت پر ٹویٹ کیا: 'ہر طرف آتش بازی ہے۔ ایسا محسوس ہو رہا ہے کہ عید قبل از وقت آ گئی۔ بہتر کھیلنے والی ٹیم کا دن رہا۔ پاکستانی ٹیم کو جیت کی مبارکباد۔'

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER, AFP
Image caption انڈیا پاکستان کے درمیان ہونے والے فائنل کے اختتام پر گوتم گمبھیر اور میر واعظ عمر فاروق کے درمیان سوشل میڈیا پر بحث

اس ٹویٹ پر سابق کپتان گوتم گمبھیر نے لكھا: 'میر واعظ آپ کے لیے ایک تجویز ہے۔ آپ سرحد پار کر کے اس پار کیوں نہیں چلے جاتے؟ وہاں آپ کو بہتر پٹاخوں (چائنیز؟) اور عید کا جشن ملے گا۔ میں پیکنگ میں آپ کی مدد کر سکتا ہوں۔'

میر واعظ کے اس ٹویٹ پر تقریباً ڈیڑھ ہزار کمنٹس آئے ہیں جبکہ اسے چھ ہزار سے زیادہ بار ری ٹویٹ اور 12 ہزار سے زیادہ لائکس ملے ہیں۔

میر واعظ اور گوتم گمبھیر کے ٹویٹس پر لوگوں نے مختلف انداز میں اپنا ردعمل ظاہر کیا۔

ایک صارف فیصل نے لكھا: 'تجھے مرچی لگی تو میں کیا کروں؟' جبکہ ایک دوسرے صارف زعیم نعیم نے لکھا: 'آپ لوگوں کا رونا شروع ہو گیا؟'

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption کشمیری رہنما میر واعظ اور ان کے جواب میں گوتم گمبھیر کا ٹویٹ

امپاسیبل رائے نامی ٹوئٹر ہنیڈل سے ایک شخص نے لکھا: 'مجھے گمبھیر پسند ہیں۔ وہ ساری باتیں براہ راست کہتے ہیں، گھما پھرا کر کوئی بات نہیں کرتے۔'

ٹوئٹر ہینڈل انڈ ورسز ٹیرارزم سے لکھا گیا: 'آپ کہیں تو میر واعظ میں آپ کے لیے انڈیا سے جانے کی ٹکٹ کا انتظام کر سکتا ہوں۔ میں اس کام کے لیے اپنی موٹرسائيكل فروخت کر دوں گا۔'

جنید کہتے ہیں: 'گمبھیر آپ کو ایک کام کیجیے۔ آپ اپنی ٹیم کے بیگ پیک كروائیے، تاکہ وہ گھر واپس جا سکے۔'

ان سب باتوں سے قبل اسی طرح کا ایک ٹویٹ معروف بزنس مین ہرش گوئنکا نے انڈین وزیر خارجہ کو طنز کا نشانہ بناتے ہوئے کیا تھا جس میں لکھا تھا: '11 انڈینز لندن کے اوول میں پھنسے ہوئے ہیں۔ میڈم سشما سوراج برائے مہربانی انھیں بچائیں۔'

اسی بارے میں