آسٹریلوی کرکٹرز بے روزگار ہونے والے ہیں؟

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

آسٹریلین کرکٹر ایسوسی ایشن کے صدر گریگ ڈائر کا کہنا ہے کہ آسٹریلیا کے دو سو سے زائد سینیئر کرکٹر ’یکم جولائی سے بے روزگار‘ ہوجائیں گے۔

کرکٹ آسٹریلیا اور ملک کے بڑے کھلاڑیوں کے درمیان حالیہ معاہدہ 30 جون کو ختم ہونے والا ہے جبکہ ان کھلاڑیوں کے ساتھ تاحال کوئی نیا معاہدہ نہیں کیا گیا ہے۔

گریگ ڈائر کا کہنا ہے کہ ’یکم جولائی سے اس بات کا قوی امکان ہے کہ ہم سب اونچی چٹان سے ایک ساتھ کودیں گے۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’معاہدہ طے پاتا ہوا دکھائی نہیں دہے رہا ہے۔‘

سابق آسٹریلوی ٹیسٹ وکٹ کیپر گریگ ڈائر نے مزید کہا کہ ’ہم سے جو بھی ممکن ہو سکا کرنے کی کوشش کریں گے لیکن یہ سب بے روزگار ہو جائیں گے۔‘

مارچ میں کرکٹ آسٹریلیا نے تبدیل شدہ یاداشت کے تحت مرد اور خواتین کرکٹرز کی تنخواہوں میں اضافے کی تجویز تو دی تھی لیکن اس کا مطلب یہ تھا کہ تنظیم کی آمدن میں سے کھلاڑیوں کو حصہ نہیں ملے گا۔

تاہم آسٹریلین کرکٹر ایسوسی ایشن نے اسے اور تنخواہوں کے حوالے سے نئی تجویز کو بھی مسترد کر دیا۔

اس سارے مسئلے کے بعد آسٹریلیا کے مردوں کی کرکٹ ٹیم پر بھی سوالیہ نشان لگا دیا ہے جس نے اگست میں بنگلہ دیش میں دو ٹیسٹ میچوں کی سریز اور آئندہ سال ایشیز ٹیسٹ سیریز میں انگلینڈ کی میزبانی کرنی ہے۔

آسٹریلوی خواتین کی ٹیم اس وقت خواتین کے ورلڈ کپ مقابلوں میں شرکت کے لیے انگلینڈ میں موجود ہے اور ان کا معاہدہ اس ٹورنامنٹ کے اختتام تک کا ہی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں