دنیا کی بہترین بولر بننا چاہتی ہوں: نشرح سندھو

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں
نشرح سندهو نے بهارت کے خلاف میچ میں بہترین بولنگ کر کے شائقین کے دل جیت لیے

انگلینڈ میں جاری ویمن ورلڈ کپ میں پاکستان انڈیا کے خلاف میچ تو ہار گیا لیکن روایتی حریف کے خلاف 26 رنز دے کر چار وکٹیں لینے والی نشرح سندهو نے بہترین بولنگ کر کے شائقین کے دل جیت لیے۔

بی بی سی کے ساتھ خصوصی بات چیت میں نشرح نے کہا: 'مجهے انڈین کپتان متهالی راج کو ایل بی ڈبلیو کر کے سب سے زیادہ خوشی ملی۔ وہ ایک اچهی کهلاڑی ہیں۔‘

انھوں نے کہا کہ ’پاکستان اور انڈیا کے درمیان میچ میں بہت دباؤ ہوتا ہے۔ پوری دنیا دیکهتی ہے لیکن میں نے یہ نہیں سوچا کہ میں بهارت کے خلاف بولنگ کر رہی ہوں بلکہ صرف اپنی بولنگ پر دھیان دیا۔'

بائیں ہاتھ سے سپین بولنگ کرانے والی 19 سالہ نشرح نے 2017 میں سری لنکا میں جنوبی افریقہ کے خلاف اپنا پہلا ون ڈے انٹرنیشنل میچ کهیلا۔

وہ اب تک آٹھ ون ڈے انٹرنیشنل میچوں میں حصہ لے چکی ہیں جس میں انھوں نے 14 وکٹیں حاصل کی ہیں۔

جب انھیں ورلڈ کپ کے لیے منتخب کیا گیا تو 15 سال کی عمر سے کالج کی سطح پر کرکٹ کهیلنے والی نشرہ کی آنکهوں میں آنسو آ گئے۔

انھوں نے بتایا: 'ورلڈ کپ سے ایک ماہ پہلے ہمارا کراچی میں 30 کهلاڑیوں کا کیمپ لگا تها۔ جب منتخب ہونے والوں کے نام لسٹ سے پڑهے جا رہے تهے تو اچانک میرا نام آیا تو پہلے تو مجهے یقین ہی نہیں آ رہا تھا لیکن جب سب نے گلے لگانا شروع کیا تو خوشی سے میں رونے لگی۔ وہ میری زندگی کا سب سے خوبصورت لمحہ تها۔'

اسی ورلڈ کپ کے لیے ہونے والے کوالیفائرز میں نشرح مجموعی طور پر 17 وکٹیں لے کر سرِفہرست رہیں۔ ان کا کہنا ہے: 'میں ویمن کرکٹ میں دنیا کی بہترین بولر بننا چاہتی ہوں اور اس لیے میں دن رات محنت کرتی ہوں۔'

نشرح لاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی میں بی ایس کے دوسرے سیمسٹر میں زیر تعلیم ہیں۔ وہ تعلیم کے میدان میں بهی آگے جانا چاہتی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption انڈیا کے خلاف میچ میں پاکستانی بولروں نے تو اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا لیکن بیٹنگ بری طرح ناکام رہی

انھوں نے کہا: 'میرے بی ایس کے امتحانات ہو رہے تهے مگر میں کرکٹ کی وجہ سے نہیں دے پائی لیکن مجهے واپس جا کر امتحان دینے ہیں۔ میں تعلیم پر بهی توجہ دینا چاہتی ہوں۔ میری خواہش ہے کہ کرکٹ کے ساتھ ساتھ میں پی ایچ ڈی بھی کروں۔'

نشرح کو کرکٹ کا شوق بچپن سے ہے۔ 'میں اپنے بابا اور جڑواں بهائی کے ساتھ شروع سے ہی کرکٹ کهیلتی تهی۔ ہم دونوں کرکٹ کے شوقین ہیں۔ میرے سارے خاندان نے مجهے بہت سپورٹ کیا۔ وہ چاہتے تهے کہ میں انٹرنشینل کرکٹ کهیلوں اور بهارت کے خلاف میری بولنگ پر میرے بابا بہت خوش ہیں۔

'میں نے انڈیا کے ساتھ میچ کے بعد جب بابا کو فون کیا تو انھوں نے شاباش دی اور کہا ہار جیت ہوتی رہتی ہے مگر تم نے اگلے میچوں میں بهی اسی طرح شاندار کارگردگی دکهانی ہےاور وکٹ پر وکٹ لینی ہے۔'

نشرح فارغ وقت میں ٹینس کهیلتی ہیں جبکہ گاہے بگاہے ڈائری بهی لکهتی ہیں۔ وہ فٹ رہنے کے لیے دن میں ڈهائی گهنٹے ورزش کرتی ہیں اور روندر جڈیجہ اور رنگانا ہیراتھ بولنگ سے کافی متاثر ہیں۔

بدھ کے میچ کے لیے نشرح کی نظریں آسٹریلیا کے کپتان میگ لیننگ اور بولٹن بلیک ویل کی وکٹوں پر ہیں۔ وہ چاہتی ہیں انھیں جلد از جلذ آوٹ کریں تاکہ دفاعی چیمپیئن پر دباؤ ڈالا جا سکے۔

بدھ کو پاکستان اپنا چوتها میچ دفاعی چیمپیئن آسٹریلیا کے خلاف لیسٹر میں کهیل رہا ہے۔ اس سے پہلے تین میچوں میں پاکستان کو جنوبی افریقہ، انگلینڈ اور بهارت کے خلاف شکست کا سامنا رہا جبکہ آسڑیلیا اب تک اپنے تینوں میچ جیت چکا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں