سری لنکن کرکٹ بورڈ کی گراؤنڈ عملے سے یونیفارم واپس مانگنے پر معافی

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ RAHUL SAMANTHA HETTIARACHCHI
Image caption گراؤنڈ عملے کو اس ضابطے کے بارے میں نہیں بتایا گیا تھا اور وہ اپنے ساتھ مزید کپڑے نہیں لائے تھے

سری لنکن کرکٹ بورڈ نے زمبابوے کے خلاف کھیلی گئی ایک روزہ میچوں کی سیریز کے آخری میچ کے بعد ہمبنٹوٹا کے گراؤنڈ سٹاف سے کپڑے واپس مانگنے پر معافی مانگی ہے۔

یہ واقعہ آخری ایک روزہ میچ کے بعد پیش آیا جب سری لنکن کرکٹ بورڈ نے گراؤنڈ میں کام کرنے والوں سے کہا کہ ان کو دن کی اجرت ملنے سے پہلے یونیفارم واپس کرنا ہو گا جس کے بعد سٹاف کے چند ممبران کو ان کے زیر جامہ میں دیکھا گیا تھا۔

واضح رہے کہ سری لنکا کی ٹیم نے زمبابوے سے اس میچ میں شکست کھائی جس کے نتیجے میں وہ سیریز بھی تین دو سے ہار گئے۔

سری لنکا کی سنڈے ٹائمز ویب سائٹ کے مطابق گراؤنڈ میں 100 کے قریب نوجوانوں کو عارضی طور پر ایک دن کے لیے ملازمت دی گئی تھی جس کے عوض انھیں 1000 سری لنکن روپے ملنے تھے۔

میچ کے بعد سری لنکن بورڈ نے کہا تھا کے ان نوجوانوں کو بورڈ کی جانب سے دیے گئے پاجامے واپس کرنے ہوں گے جس کے بعد انھیں اجرت ملے گی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سری لنکا کی ٹیم زمبابوے سے سیریز تین دو سے ہار گئی

سنڈے ٹائمز کے مطابق ان نوجوانوں کو اس بات کا علم نہیں تھا اور وہ اپنے ساتھ مزید کپڑے لے کر نہیں آئے تھے۔

سری لنکن بورڈ نے معافی مانگتے ہوئے اپنے بیان میں کہا 'ہم ان تمام لوگوں کے خلاف سخت ایکشن لیں گے جو اس واقعے کے ذمہ دار ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ ہم ان لوگوں سے معافی مانگتے ہیں جن کو یہ ہزیمت اٹھانا پڑی ہے۔ ہم اپنی پوری کوشش کریں گے کہ اس کی تلافی ہو۔'

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں