ومبلڈن: وینس ولیمز کو فائنل میں موگوُرزا کے ہاتھوں سٹریٹ سیٹس میں شکست

ٹینس تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ومبلڈن کی فاتح گاربین موگوُرزا

سال کے تیسرے گرینڈ سلام اور دنیائے ٹینس کے سب سے مشہور ٹورنامنٹ ومبلڈن میں خواتین کے فائنل میں سپین کی گاربین موگوُرزا نے امریکہ کی وینس ولیمز کو 7-5 ، 6-0 سے شکست دے کر اپنا پہلا ومبلڈن ٹورنامنٹ جیت لیا ہے۔

23 سالہ گاربین موگوُرزا کے کیریئر کا یہ دوسرا گرینڈ سلام ٹائٹل ہے اور وہ سپین سے تعلق رکھنے والی دوسری کھلاڑی ہیں جنھوں نے اس ٹورنامنٹ میں فتح حاصل کی ہے۔

وینس ولیمز ومبلڈن کے فائنل میں

راجر فیڈرر 11ویں دفعہ ومبلڈن کے فائنل میں پہنچ گئے

گاربین موگوُرزا دو سال قبل ہونے والے ومبلڈن کے فائنل میں بھی پہنچی تھیں جہاں ان کو وینس ولیمز کی چھوٹی بہن سیرینا ولیمز کے ہاتھوں شکست ہوئی تھی لیکن 2016 کے فرنچ اوپن میں موگوُرزا نے سیرینا کو ہی شکست دے کر اپنا پہلا گرینڈ سلام ٹورنامنٹ جیتا تھا۔

ومبلڈن کا فائنل ان دونوں کھلاڑیوں کے درمیان پانچواں مقابلہ تھا اور وینس کو 3- 1 سے برتری حاصل تھی۔ بارش کی وجہ سے فائنل ومبلڈن کی بند چھت کے نیچے کھیلا گیا۔

پہلے سیٹ میں دونوں کھلاڑیوں نے برابر کا مقابلہ کیا اور اپنی سروس برقرار رکھی۔ دونوں کھلاڑیوں کو ایک ایک بار بریک کرنے کا موقع ملا لیکن وہ فائدہ نہ اٹھا سکیں۔

10ویں گیم میں وینس نے موگوُرزا پر شدید دباؤ ڈالا اور دو میچ پوائنٹ حاصل کیے لیکن موگوُرزا نے اپنی سروس برقرار رکھی اور 5-5 پر مقابلہ برابر کر دیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

اس موقع پر لگ رہا تھا کہ پہلا سیٹ ٹائی بریک میں چلا جائے گا لیکن اگلے گیم میں موگوُرزا وینس ولیمز کی سروس کو بریک کرنے میں کامیاب ہو گئیں۔

اس کے بعد تو جیسے ان کو پر لگ گئے اور وینس ولیمز ان کے تابڑ توڑ شاٹس کا مقابلہ نہ کر سکیں۔ دوسرے سیٹ میں موگوُرزا نے وینس کو ایک گیم بھی جیتنے کا موقع نہیں دیا اور پورا میچ 77 منٹ میں اختتام پذیر ہو گیا۔

37 برس کی وینس ولیمز 1994 میں 38 سالہ مارٹینا نیوراٹیلوا کے بعد ومبلڈن کے فائنل میں پہنچنے والی سے سے بڑی عمر کی خاتون کھلاڑی ہیں۔ حیران کن بات یہ ہے کہ 1994 میں نیوراٹیلوا کو شکست دینے والی سپین کی کونچیٹا مارٹینز آج موگوُرزا کی کوچ ہیں۔

سات دفعہ گرینڈ سلام جیتنے والی وینس ولیمز کا 16واں گرینڈ سلام فائنل ہے اور اس میچ سے پہلے انھیں کسی گرینڈ سلام کے فائنل میں صرف اپنی بہن سیرینا سے شکست ہوئی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption موگوُرزا فتح حاصل کرنے کے بعد

دوسری جانب اتوار کو مردوں کے فائنل میں سوئٹزرلینڈ کے راجر فیڈرر کا مقابلہ کروشیا کے مارن چلچ سے ہو گا۔

18 دفعہ گرینڈ سلام جیتنے والے راجر فیڈرر نے اب تک سات ومبلڈن ٹورنامنٹس جیتے ہیں لیکن ان کی آخری فتح 2012 میں تھی جب انھوں نے اینڈی مرے کو شکست دی تھی۔

مارن چلچ نے گذشتہ سال فیڈرر سے ومبلڈن کے کوارٹر فائنل میں پانچ سیٹ کے سخت مقابلے کے بعد شکست کھائی تھی لیکن وہ 2014 میں یو ایس اوپن کے سیمی فائنل میں فیڈرر کو ہرا چکے ہیں جہاں بعد میں انھوں نے فائنل میں جاپان کے کئی نشیکوری کو ہرا کر اپنا واحد گرینڈ سلام جیتا تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں