راجر فیڈرر آٹھ مرتبہ ومبلڈن ٹائٹل جیتنے والے پہلے کھلاڑی

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

ومبلڈن اوپن ٹینس ٹورنامنٹ کے مردوں کے فائنل میچ میں سوئٹزرلینڈ کے راجر فیڈرر نے کروشیا کے مارین چلچ کو شکست دے کر تاریخی فتح اپنے نام کی ہے۔

سات مرتبہ کے ومبلڈن چیمپیئن راجر فیڈر ومبلڈن کے سینٹر کورٹ میں مارین چلچ کو شکست دے کر نہ صرف آٹھویں مرتبہ ٹائٹل حاصل کرنے والے دنیا کے پہلے کھلاڑی بن گئے ہیں بلکہ یہ اعزاز حاصل کرنے والے دنیا کے سب سے عمر رسیدہ کھلاڑی بھی بن گئے ہیں۔

وینس ولیمز ومبلڈن کے فائنل میں

دفاعی چیمپیئن اینڈی مرے ومبلڈن اوپن سے باہر ہو گئے

39 سال بعد برطانوی خاتون ومبلڈن کے سیمی فائنل میں

سپین کے رافیل ندال ومبلڈن اوپن سے باہر ہو گئے

پہلے سیٹ میں فیڈرر نے چلچ پر چھ ایک کے مقابلے میں چھ تین سے برتری حاصل کی۔

دوسرا سیٹ بھی فیڈرر نے چھ ایک سے جیت لیا۔

دوسرے سیٹ میں چلچ اس وقت روتے دکھائی دیے جب وہ سلپ ہو گئے اور میڈیکل ٹیم کو میدان میں آنا پڑا۔

تیسرے سیٹ میں چلچ نے کچھ بہتر کھیل کا مظاہرہ کیا لیکن پھر بھی فیڈرر چھ چار سے یہ سیٹ جیت گئے۔

کروشیا کے مارین چلچ نے پہلی بار ومبلڈن کے فائنل تک رسائی حاصل کی ہے۔

35 سالہ راجر فیڈرر نے ٹامس برڈک کو 6-7، 4-7، 6-7، 4-7، اور 4-6 کے فرق سے شکست دے کر 11 ویں مرتبہ ومبلڈن کا فائنل کھیلنے کا اعزاز حاصل کیا تھا۔

میچ جیتنے کے بعد فیڈرر کا کہنا تھا 'ایک اور فائنل کھیلنا میرے لیے اعزاز کی بات ہے۔'

راجر فیڈرر نے کہا کہ'مجھے معلوم نہیں تھا کہ ہر بار جب یہاں آؤں گا تو بہترین ہو گا، یہاں آ کر خود کو بہت اچھا محسوس کیا اور اب ٹرافی اٹھا رکھی ہے، ایک بھی سیٹ نہ ہارنا ایک سحر کی طرح ہے، مجھے ابھی تک اس کا یقین نہیں آیا ہے اور یہ واقعی میں بہت زیادہ ہے۔'

پہلے سیمی فائنل میں کروشیا کے مارین چلچ نے امریکا کے سیم کیوری کو شکست دی تھی۔

اسی بارے میں