آئی سی سی ویمن ورلڈ کپ: انگلینڈ نے سیمی فائنل میں جنوبی افریقہ کو شکست دے دی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

برطانیہ میں جاری آئی سی سی ویمن ورلڈ کپ میں انگلینڈ نے ایک کانٹے دار مقابلے کے بعد جنوبی افریقہ کو شکست دے کر فائنل میں اپنی جگہ بنا لی ہے۔

اس میچ کے آخری اوورز میں چند ایسے لمحات آئے جب جنوبی افریقہ کی ٹیم کے جیتنے کا امکان روشن ہو گئے تھے مگر انگلینڈ کی بلے بازوں نے 219 کا ہدف حاصل کر لیا۔

جنوبی افریقہ نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹیگ کرنے کا فیصلہ کیا تو ان ٹیم چھ وکٹوں کے نقصان پر 218 رنز ہی بنا سکی۔

جواب میں انگلینڈ نے یہ ہدف آٹھ وکٹوں کے نقصان پر آخری اوور چوتھی گیند پر حاصل کر لیا۔

میچ کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انگلینڈ کی کپتان ہیدھر نائٹ نے کہا 'میچ کے دوران ہماری ٹیم سے بہت سی غلطیاں ہوئیں، میں خود بهی ایک غلط فیصلہ لیتے ہوئے رن آوٹ ہو گئی مگر ہمیں خوشی ہے کہ ہم فائنل تک پہنچے گئے۔'

ہیدھر نائٹ کا کہنا تھا کہ 'اپنے ملک کے لیے اپنے ہی ملک میں فائنل کهیلنے کی خواہش اس ٹورنامنٹ کے آغاز سے ہی تهی اور ہم پوری کوشش کریں گے کہ فائنل میں ان غلطیوں کو نہ دہرائیں۔'

میچ جینے کے بعد دونوں ٹیمیں خاصی جذباتی نظر آئیں۔ جنوبی افریقہ کی بعض کهلاڑی اپنے آنسوؤں پر قابو نہ پا سکیں اور گراؤنڈ کے ایک کونے میں ٹیم سے جدہ روتے ہوئے نظر آئیں۔

جنوبی افریقہ میگنون ڈو پری اور لارا والورڈ کی نصف سنچریوں کے باوجود جیت سے ہمکانر نہ ہو سکی۔

میچ کے بعد جنوبی افریقہ کی کپتان ڈین وان نیکرک نے کہا 'ہم بہت آفسردہ ہیں۔ میں بهی شاہد پریس کانفرنس کے بعد رو دوں، ہم اگر 30 رنز مزید بنا لیتے تو جیت جاتے۔ خیر اپنی ٹیم کی کارکردگی پر یقین رکهتے ہوئے ہم میدان میں بولنگ کے لیے اترے اور بولز نے بہت اچها کهیل پیش کیا۔ مجهے اپنی ٹیم پر فخر ہے۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

صافیوں سے بات کرتے ہوئے ان کی آنکهیں مسلسل نم تهیں اور چہرے پر افسردگی نمایاں تهی۔ ایک موقع پر وہ اپنے آنسو روکنے کی کوشش کرتی نظر آئیں۔

دوسری جانب اس میچ کی بہترین کھلاڑی قرار پانے والی سارہ ٹیلر کا کہنا تھا کہ 'ہم سب کے لیے یہ اب تک کا ایک عمدہ سفر رہا ہے۔ اس موقع پر ہم سب بہت جذباتی ہیں۔ جنوبی افریقہ نے زبردست کرکٹ کا مظاہرہ کیا اور اتنے قریب آکر ہارنے پر کیسا محسوس ہوتا ہے ہم بہ خوبی جانتے ہیں کیونکہ انگلینڈ کی ٹیم اس طرح کے مراحل سے گزر چکی ہے۔ تاہم ہماری بلے بازوں نے آخر میں گیم سهنبالتے ہوئے ہمیں جیت سے ہمکنار کیا۔'

جنوبی افریقہ کی کپتان کا کہنا تها: 'ہم نے جس طرح کا کانٹے دار مقابلہ دنیا کی ایک بہترین ٹیم کے خلاف کیا اس پر مجهے فخر ہے۔ اس سے ہم نے یہی سیکها ہے کہ آخری دم تک ہمت نہیں ہارنی چاہیے۔ گوکہ جیت کے اتنے قریب آکر یوں میچ کے ہاتھ سے نکالنے کا دکھ تو ہوتا ہے مگر ہمیں اس سے آگے بڑهنا ہے اور اپنی کرکٹ کو بہتر کرنا ہے۔'

واضح رہے کہ 20 جولائی کو ڈربی میں آسٹریلیا اور انڈیا کے درمیان دوسرا اور آخری سیمی فائنل کھیلا جائے گا جس کے بعد جیتنے والی ٹیم اتوار کو ہونے والے فائنل میچ میں انگلینڈ کے مدمقابل ہو گی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں