’عارضی معافی‘ کے بعد گیل ٹیم میں شامل ہو سکتے ہیں

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ویسٹ انڈیز کے بہت سے کرکٹ کھلاڑي گھریلو ون ڈے مقابلوں میں حصہ نہ لینے کا فیصلہ کر رکھا ہے

کرکٹر کرس گيل ویسٹ انڈیز کے ان کھلاڑیوں میں سے ایک ہیں جو اپنی یونین اور کرکٹ بورڈ کے درمیان ’عارضی معافی‘ کی وجہ سے اس برس انگلینڈ کے ساتھ ون ڈے سیریز کھیل سکیں گے۔

ڈویئن براوو، کائرن پولارڈ، سنیل نارائن اور میرلن سیمیول ویسٹ انڈیز کے وہ دیگر کھلاڑی ہیں جو ون ڈے ٹیم میں سلیکشن کے لیے دستیاب ہو سکتے ہیں۔

ویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ کی پالیسی رہی ہے کہ وہ انھی کھلاڑیوں کا ٹیم میں انتخاب کرتا ہے جنھوں نے مقامی کرکٹ میچز میں بھی اسی فارمیٹ میں حصہ لیا ہو۔

اور ویسٹ انڈیز کے بہت سے کھلاڑی مقامی ون ڈے مقابلوں میں حصہ نہیں لیتے کیوں کہ ایسے میچز عموماً اسی وقت ہو رہے ہوتے ہیں جب اکثر بیرون ملک ’بِگ بیش‘ جیسی منافع بخش لیگز کھیلی جا رہی ہوتی ہیں۔

کرکٹ ویسٹ انڈیز نے اس سے متعلق ایک بیان میں کہا ہے کہ 'کھلاڑیوں کی یونین کے ساتھ ’معافی‘ کا عمل اس طویل حکمت عملی کا حصہ ہے جس کا مقصد کھلاڑیوں کے ساتھ تعلقات کو بہتر کرنا ہے۔‘

ویسٹ انڈیز کی ٹیم اگلے ماہ انگلینڈ کا دورہ کرنے والی ہے جس میں پہلے تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز ہوگی اور 17 اگست سے شروع ہونے والا ٹیسٹ میچ ڈے اینڈ نائٹ ہوگا۔

اس دورے میں ٹیسٹ سیریز کے لیے ویسٹ انڈیز نے ٹیم کا اعلان پہلے ہی کر دیا تھا جس میں گیل جیسے بڑے نام شامل نہیں ہیں۔

ٹیسٹ سیریز کے بعد دونوں کے درمیان 16 ستمبر کو ایک ٹی 20 میچ ہوگا اور اس کے بعد پانچ ون ڈے میچوں کی سیریز 19 ستمبر سے کھیلی جائے گی۔ ابھی ون ڈے ٹیم کا اعلان ہونا باقی ہے۔

سنہ 2014 میں ویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ اور کھلاڑیوں کے درمیان معاوضے کی وجہ سے ہونے والے ایک تنازع کی وجہ سے انڈيا کا دورہ اچانک ختم ہوگیا تھا۔ ویسٹ انڈيز کی ٹیم اس برس ہونے والی چیمپیئنز ٹرافی کے لیے بھی کوالیفائی نہیں کر سکی تھی۔

ویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ کے چیف ایگزکٹیو جانی گریو نے کہا 'ہم اس بات کا اعتراف کرتے ہیں کہ ہم 2019 کے ورلڈ کپ کے لیے خود بخود کوالیفائی مشکل سے کر سکیں گے۔۔۔ یہ بہت اہم ہے کہ آنے والے اہم میچز میں ہمارے بہترین کھلاڑی سلیکشن کے لیے دستیاب ہوں۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں