’وینیسا او برائن کے ٹو سر کرنے والی پہلی امریکی خاتون بن گئیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ FACEBOOK

52 سالہ وینیسا او برائن وہ پہلی امریکی خاتون بن گئیں جنھوں نے پاکستان میں واقع دنیا کے دوسرے بلند ترین پہاڑ ’کےٹو‘ کو کامیابی سے سر کیا ہے۔

’کے ٹو‘ کو کوہ پیما 'وحشی پہاڑ' کے نام سے جانتے ہیں اور آج تک صرف 18 خواتین کوہ پیما ہی اس کی چوٹی پر پہنچ سکی ہیں۔

'کے ٹو سر کرنے کے لیے پہلی پاکستانی مہم'

' کے ٹو' کی کہانی میں امیر مہدی گمنام کیوں؟

پاکستان میں کوہ پیمائی کے فروغ کے لیے کام کرنے والی تنظیم الپائن کلب کے مطابق وینیسا جمعے کو پہاڑ کی چوٹی پر پہنچی تھیں اور اب ان کا اترائی کا سفر جاری ہے۔

وینیساکے ٹو کے بیس کیمپ پر جولائی کے پہلے ہفتے میں پہنچی تھیں جس کے بعد انھوں نے پہاڑ پر چڑھنا شروع کیا تھا۔

وینیسا او برائن ماضی میں دنیا کی بلند ترین چوٹی ماؤنٹ ایورسٹ بھی سر کر چکی ہیں لیکن ان کا کہنا ہے 'جب آپ ایورسٹ سر کرتے ہیں تو آپ دنیا کی نظر میں کوہ پیما ہیں لیکن جب آپ کے ٹو سر کرتے ہیں تو آپ کوہ پیماؤں کی نظر میں کوہ پیما ہیں۔'

کے ٹو کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ تکنیکی لحاظ سے اسے سر کرنا بہت مشکل ہے اور چوٹی پر پہنچنے اور وہاں سے نیچے آنے کی کوشش کرنے والے ہر چار کوہ پیماؤں میں سے ایک کی موت ہوتی ہے۔

اعداد و شمار کے مطابق اب تک کے ٹو کو 377 کوہ پیماؤں سے سر کیا ہے جن میں سے 18 امریکی ہیں لیکن ان امریکیوں میں سے کوئی خاتون کوہ پیما نہیں تھیں۔

متعلقہ عنوانات