ٹیکس چوری کا الزام، رونالڈو کی عدالت میں پیشی

رونالڈو تصویر کے کاپی رائٹ AFP

لاکھوں یورو ٹیکس چوری کے الزامات میں گھرے پرتگالی فٹبالر کرسچیانو رونالڈو سپین کی عدالت میں پیش ہوئے ہیں۔

استغاثہ کا الزام ہے کہ رونالڈو نے سنہ 2010 سے ایک کروڑ 47 لاکھ یورو (ایک کروڑ 73 لاکھ ڈالر) ٹیکس بچایا ہے۔

ہسپانوی فٹبال کلب ریال میڈرڈ کی نمائندگی کرنے والے کرسچیانو رونالڈو کا شمار دنیا کے امیر ترین کھلاڑیوں میں ہوتا ہے اور وہ اپنے اوپر عائد الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ ان کا 'ضمیر مطمئن ہے۔'

اس سے قبل بارسلونا کلب کی نمائندگی کرنے والے ارجنٹیا کے لیونل میسی کو بھی ٹیکس چوری کے الزامات کا سامنا تھا اور جرم ثابت ہونے پر انھیں 21 ماہ قید کی سزا سنائی گئی تھی۔

تاہم رواں ماہ کے آغاز میں عدالت نے ان کی جیل کی سزا 252000 یورو ادائیگی کے بدلے ختم کر دی تھی۔

بہرحال میسی پر 41 لاکھ یورو ٹیکس چوری کا الزام تھا جو رونالڈو سے ایک کروڑ یورو کم ہے۔

رونالڈو پیر کو مقامی وقت کے مطابق 11 بجے میڈرد کے نواح میں واقع عدالت میں اپنے ثبوت پیش کرنے کے لیے پہنچے۔

استغاثہ کے مطابق رونالڈو نے مبینہ طور پر 2010 میں سپین میں کمانے والی آمدن چھپانے کے لیے ایک کمپنی سٹرکچر کا فائدہ اٹھایا جو کہ سپین میں مالیاتی ضابطہ کار کی خلاف ورزی تھا۔

رونالڈو کی انتظامیہ ان الزامات کی تردید کرتی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں