عمر اکمل کا نازیبا زبان استعمال کرنے کا الزام، مکی آرتھر کی تردید

عمر اکمل تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption عمر اکمل چیمپیئنز ٹرافی سے قبل برمنگھم میں پاکستانی ٹیم کے کیمپ کے دوران لیے گئے فٹنس ٹیسٹ پاس کرنے میں ناکام رہے تھے

پاکستانی کرکٹر عمر اکمل کا کہنا ہے کہ ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے ان کے خلاف نازیبا زبان استعمال کی ہے تاہم مکی آرتھر نے ان الزامات کی تردید کی ہے۔

لاہور میں بی بی سی کی نامہ نگار حنا سعید کے مطابق میڈیا سے بات کرتے ہوئے مڈل آرڈر بلے باز عمر اکمل نے کہا کہ چونکہ وہ سینٹرل کنٹریکٹ کھلاڑی نہیں اس لیے مکی آرتھر نے ان کی بےعزتی کرتے ہوئے انھیں کرکٹ اکیڈمی میں پریکٹس نہیں کرنے دی اور یہ سارا واقعہ چیف سلیکٹر انضمام الحق اور مشتاق احمد کے سامنے پیش آیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ’کرکٹ اکیڈمی میں سینٹرل کنٹریکٹ کھلاڑیوں کو ورک آوٹ کروا رہے ہیں تو میں بھی پاکستانی ٹیم کا کھلاڑی ہوں اور اپنی خراب فٹنس پر کام کرنا چاہتا تھا۔ میں مکی آرتھر کہ پاس گیا تو انھوں نے مجھے ڈانٹا اور انضمام الحق کے کمرے میں لے گئے اور ان کے سامنے مجھے گالیاں دیں۔ یہ میرے لیے بہت تکلیف دہ تھا کہ اتنے بڑے نام میرے سامنے بیٹھے تھے لیکن انھوں نے مکی آرتھر کو نہیں روکا کہ آپ تھوڑا سا کنٹرول کریں، یہ ہمارا کھلاڑی ہے۔‘

عمر اکمل کا کہنا تھا کہ ان کی فنٹس ٹھیک نہیں اور اس بات کو انھوں نے ہمیشہ تسلیم کیا ہے لیکن مکی آرتھر ان کو بغیر وجہ کے نشانہ بنا رہے ہیں جبکہ اس سے قبل بھی وہ اور کھلاڑیوں کو گالیاں دے چکے ہیں۔

عمر اکمل نے کہا کہ ’میں دس دن پہلے انگلینڈ سے گھٹنے کی انجری کی ریکوری کر کے واپس آیا تو سب کو فون کیا کیونکہ میں وعدہ کر کے گیا تھا کہ واپس آ کر وہی کروں گا جو پی سی بی انتظامیہ کہے گی۔ جب میں نے مکی آرتھر کو کہا کہ آپ مجھے کوئی ٹرینر دیں پھر بھی انھوں نے مجھے گالیاں دیں اور مجھے کہہ دیا کہ تمہیں یہاں آنا ہی نہیں چاہیے، تم جا کر کلب کرکٹ کھیلو، تمہیں پتا نہیں یہاں آنے کی اجازت کون دیتا ہے۔ مکی نے یہ مجھے نہیں بلکہ پورے پاکستان کو گالیاں دی ہیں۔ آپ جس مرضی میچ کی تاریخ نکال لیں وہ کسی نہ کسی کھلاڑی کو گالیاں دے رہے ہوتے ہیں۔ اتنے سینیئر کھلاڑیوں کے سامنے مکی نے یہ سب کچھ کہا، اسی لیے مجھ سے برداشت نہیں ہوا اور میں یہ سچائی پاکستانی عوام اور اپنے مداحوں کے سامنے لایا ہوں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption میں نے عمر اکمل کو کوئی گالی نہیں دی اور نہ ہی کوئی نامناسب الفاظ کا استعمال کیا: مکی آرتھر

پی سی بی کا عمر اکمل کے خلاف ممکنہ ایکشن کے بارے میں پوچھا گیا تو عمر نے کہا کہ ’میں کرکٹ بورڈ کے خلاف بات نہیں کر رہا، یہ لوگ کرکٹ بورڈ کے ملازم ہیں۔ میں کرکٹ بورڈ کو یہ بتانا چاہ رہا ہوں کہ یہ لوگ کھلاڑیوں کے ساتھ کیسا سلوک کر رہے ہیں، خاص طور پر کوچنگ سٹاف۔ میں پاکستان ٹیم کا کھلاڑی ہوں اور اکیڈمی اسی لیے ہے کہ پلئیر اپنی غلطیاں دور کر سکیں، وہاں پر بھی مجھے یہ موقعہ نہیں دیا جا رہا تو میں کہاں جاؤں؟‘

کراچی سے بی بی سی کے نامہ نگار عبدالرشید شکور کے مطابق مکی آرتھر نے عمر اکمل کے الزامات کو مسترد کر دیا ہے۔ بی بی سی سے بات کرتے ہوئے مکی آرتھر نے کہا کہ عمر اکمل کو کوئی گالی نہیں دی۔

’جب میں کیمپ میں آیا تو میں نے عمر اکمل سے کہا کہ آپ کیمپ کا حصہ نہیں ہیں۔ اس لئے آپ کوچنگ سٹاف کا استعمال نہیں کر سکتے اور ان کے ساتھ ٹریننگ بھی نہیں کر سکتے۔ آپ جائیں اور کلب کرکٹ کھیلیں اور پہلے اپنی فٹنس پر توجہ دیں۔ میں نے عمر اکمل کو کوئی گالی نہیں دی اور نہ ہی کوئی نامناسب الفاظ کا استعمال کیا۔‘

پاکستان کرکٹ بورڈ کے ٹوئٹر اکاؤنٹ کے مطابق پی سی بی عمر اکمل کو اظہار وجوہ کا نوٹس جاری کرے گا اور ضابطے کے مطابق ان کے خلاف کارووائی کی جائے گی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں