ڈھاکہ ٹیسٹ میں بنگلہ دیش نے آسٹریلیا کو 20 رنز سے شکست دے دی

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption شکیب الحسن مین آف دی میچ قرار دیے گئے

17سال قبل ٹیسٹ کرکٹ میں قدم رکھنے والی بنگلہ دیش کی ٹیم نے ڈھاکہ میں کھیلنے جانے والے میچ میں ٹیسٹ کرکٹ کی کامیاب ترین ٹیم آسٹریلیا کو 20 رنز سے شکست دے کر نئی تاریخ رقم کی ہے۔

یہ میچ بنگلہ دیش کی ٹیسٹ میچوں کی تاریخ کا 101واں میچ تھا جو ان کی دسویں فتح پر ختم ہوا۔

آسٹریلیا اور بنگلہ دیش کا میچ بارش کی نذر

میچ کے ہیرو بنگلہ دیش کے آل راؤنڈر اور ان کے بہترین کھلاڑی شکیب الحسن رہے جنھوں نے پہلی اننگز میں شاندار 84 رنز بنائے اور اس کے بعد دنوں اننگز میں پانچ پانچ وکٹیں لے کر میچ میں دس کھلاڑی آؤٹ کیے۔

اس کارکردگی پر مین آف دی میچ کا اعزاز بھی انھی کو ملا۔

آسٹریلیا کو کھیل کے چوتھے دن فتح کے لیے 156 رنز درکار تھے جبکہ کریز پر کپتان سٹیو سمتھ اور نائب کپتان ڈیوڈ وارنر کی جوڑی موجود تھی جو 81 رنز کی شراکت قائم کر چکے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ڈیوڈ وارنر کا شاندار سنچری رائیگاں گئی

پانچویں دن کا کھیل شروع ہونے کے بعد وارنر نے اپنی جارحانہ بیٹنگ جاری رکھی اور نہایت مشکل حالات اور دباؤ کے باوجود شاندر سنچری سکور کی۔

اس موقع پر لگ رہا تھا کہ بنگلہ دیش شاید ہمت ہار جائے لیکن 158 رنز کے مجموعی وارنر کے آؤٹ ہوتے ہی ان کی امیدوں کے دیے دوبارہ روشن ہو گئے۔

صرف 13 رنز کے بعد کپتان سمتھ بھی 37 رنز بنا کر پویلین واپس لوٹ گئے اور کھانے کے وقفے تک آسٹریلیا کو جیت کے لیے 66 رنز درکار تھے جبکہ ان کی صرف تین وکٹیں باقی تھیں اور میدان میں موجود شائقین کو یقین تھا کہ بہت جلد وہ میچ جیت جائیں گے۔

کھانے کے وقفے کے بعد کی پہلی گیند پر شکیب نے میکس ویل کو آؤٹ کر کے اپنی دسویں وکٹ حاصل کرلی لیکن اس کے بعد آنے والے آسٹریلوی بلے بازوں نے ہمت نہ ہاری اور سکور کو بڑھاتے گئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption بنگلہ دیش کی ٹیسٹ میچوں میں یہ دسویں جیت ہے

پیٹ کمنز نے نویں نمبر پر آ کر جارحانہ بیٹنگ کی اور وکٹیں گرنے کے باوجود آسٹریلیا جیت سے 20 رنز کی دوری پر تھا جب فاسٹ بولر تیج الاسلام نے جوش ہیزل وڈ کو آؤٹ کر کے بنگلہ دیش کو تاریخی فتح سے ہمکنار کروا دیا۔

اس سے پہلے بنگلہ دیش نے زمبابوے کو پانچ مرتبہ، ویسٹ انڈیز کو دو مرتبہ جبکہ سری لنکا اور انگلینڈ کو ایک ایک بار شکست دی ہے۔

دو میچوں کی سیریز کا اگلا میچ چار ستمبر سے چٹاگانگ میں کھیلا جائے گا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں