ورلڈ الیون کے خلاف جیت نے اعتماد میں اضافہ کیا ہے: سرفراز احمد

سرفراز تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ ورلڈ الیون آسان ٹیم نہیں تھی اس میں دنیا کے چند بڑے کھلاڑی شامل تھے اور اس کے خلاف سیریز جیتنے سے پاکستانی ٹیم کے اعتماد میں اضافہ ہوا ہے۔

لاہور کے قذافی سٹیڈیم میں کھیلے گئے تیسرے ٹی 20 انٹرنیشنل میں 33 رنز کی جیت کے بعد سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ چیمپئنز ٹرافی اور اب ورلڈ الیون کے خلاف جیت کے بعد پاکستانی ٹیم سری لنکا کے خلاف زیادہ اعتماد سے سیریز کھیلے گی۔

پاکستان نے آزادی کپ جیت لیا

آزادی کپ میں پاکستان کی فتح

سری لنکا کے خلاف دو ٹیسٹ پانچ ون ڈے اور تین ٹی 20 انٹرنیشنل میچوں کی سیریز 28 ستمبر سے متحدہ عرب امارات میں شروع ہورہی ہے جس کا آخری ٹی20 انٹرنیشنل 29 اکتوبر کو لاہور میں کھیلا جائے گا۔

سرفراز احمد نے کہا کہ تقریباً چار ماہ بعد پاکستانی ٹیم ٹیسٹ سیریز کھیلے گی جس کی تیاری کے لیے لاہور میں کیمپ لگے گا لہذا اس سیریز کی بھرپور تیاری کی جائے گی اور پوری توجہ اس سیریز پر مرکوز رہے گی۔

سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ جب بھی آپ ہوم کراؤڈ کے سامنے کھیلتے ہیں اس کا اثر بہت موثر ہوتا ہے اور پاکستانی کھلاڑی پچھلے کئی برس سے اس سے محروم تھے۔ یہی وجہ ہے کہ جب حسن علی یا کوئی بھی دوسرا بولر گیند کررہا تھا تو کراؤڈ کا جوش وخروش اس بولر کے حوصلے بڑھارہا تھا۔م اضی میں ہم یہ چیز وسیم اکرم، وقاریونس اور شعیب اختر کی بولنگ کے وقت دیکھ چکے ہیں کہ کس طرح انھیں ہوم کراؤڈ کی سپورٹ حاصل ہوا کرتی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ انھوں نے اپنے کھلاڑیوں کو سیریز سے پہلے یہی بات کہی تھی کہ جب آپ اپنے کراؤڈ کے سامنے کھیلتے ہیں تو سب آپ کو پہچانتے ہیں اور جس طرح پاکستانی کرکٹرز نے پرفارمنس دی ہے اور انہیں شائقین نے داد دی ہے اس سے یقیناً ان کا حوصلہ بڑھے گا۔

سرفراز احمد کہتے ہیں کہ انھوں نے ورلڈ الیون کے خلاف سیریز میں شائقین کا جو جوش وخروش دیکھا ہے وہ پاکستان سپر لیگ کے فائنل اور دو سال قبل لاہور میں زمبابوے کے خلاف ہونے والے میچز میں نہیں تھا۔

سرفراز احمد کا کہنا ہےکہ پاکستانی کھلاڑیوں کی فٹنس میں بہتری آنے کے نتیجے میں فیلڈنگ کا معیار بھی بلند ہوا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں