عمراکمل باہر، تنویر کے لیے جگہ نہیں

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption عمر اکمل کو سری لنکا کے خلاف ٹیسٹ سیریز میں شامل نہیں کیا گیا ہے۔

مڈل آرڈر بیٹسمین عمراکمل مسلسل مایوس کن کارکردگی کے سبب بالآخر سلیکٹرز کا اعتماد کھو بیٹھے اور سری لنکا کے خلاف متحدہ عرب امارات میں کھیلی جانے والی ٹیسٹ سیریز کے لیے جس پندرہ رکنی ٹیم کا اعلان کیا گیا ہے اس میں وہ شامل نہیں ہیں۔

سب سے حیران کن فیصلہ فاسٹ بولر تنویر احمد کو ٹیم سے باہر رکھنے کا ہے جنہیں چار ٹیسٹ میچوں میں سولہ وکٹیں حاصل کرنے کے باوجود پہلے زمبابوے اور اب سری لنکا کے خلاف سیریز کے لیے نظرانداز کردیا گیا۔

فاسٹ بولرز عمرگل، وہاب ریاض اور لیفٹ آرم سپنر عبدالرحمنٰ کی واپسی ہوئی ہے۔

کراچی سے نامہ نگار عبدالرشید شکور نے بتایا کہ چیف سلیکٹر محسن خان نے ٹیم کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ عمراکمل ایک باصلاحیت کرکٹر ہیں لیکن وہ اچھی کارکردگی دکھانے میں ناکام رہے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ زمبابوے کے دورے میں پاکستانی مڈل آرڈر بیٹنگ کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

واضح رہے کہ اپنے اولین ٹیسٹ میں ایک سو انتیس اور پچہتر رنز کی شاندار اننگز کے بعد عمراکمل کی کارکردگی کا گراف گرتا چلاگیا اور پہلی سات ٹیسٹ اننگز میں ایک سنچری اور چار نصف سنچریاں بنانے کے بعد وہ اگلی بائیس اننگز میں صرف دو نصف سنچریاں بنا پائے۔

فاسٹ بولر تنویر احمد پر جنید خان کو ترجیح دیے جانے کے بارے میں سوال پر محسن خان کا کہنا تھا کہ موسمی حالات حریف ٹیم کی قوت کو دیکھتے ہوئے ٹیم منتخب کی گئی ہے اور اس کا ہرگز مطلب یہ نہیں کہ کسی کھلاڑی کو نظرانداز کردیا گیا ہے۔

جنید خان کی ٹیسٹ ٹیم میں شمولیت اس لیے بھی حیران کن ہے کہ ٹیم میں لیفٹ آرم فاسٹ بولر وہاب ریاض پہلے سے موجود ہیں۔

محسن خان کا فخریہ لہجے میں کہنا تھا کہ نوجوان کرکٹرز کو مسلسل مواقع دیے جا رہے ہیں لیکن جب ان سے سوال کیا گیا کہ ہر دورے میں نئے چہرے سامنے آتے ہیں اور پچھلے چہرے کہیں گم ہوجاتے ہیں تو محسن خان نے کہا کہ انہوں نے پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین سے کہا تھا کہ زمبابوے کے دورے میں کوئی بھی کھلاڑی بغیر کھیلے واپس نہ آئے۔

سری لنکا کے خلاف ٹیسٹ سیریز کے لئے اعلان کردہ ٹیم ان کھلاڑیوں پر مشتمل ہے۔

مصباح الحق( کپتان)، توفیق عمر، محمد حفیظ، عمران فرحت، یونس خان، اظہرعلی، اسد شفیق، شعیب ملک، عدنان اکمل، عمرگل، وہاب ریاض، اعزازچیمہ، عبدالرحمن، سعید اجمل اور جنید خان۔

پہلا ٹیسٹ اٹھارہ سے بائیس اکتوبر تک ابوظہبی میں کھیلا جائے گا۔ دوسرا ٹیسٹ چھبیس سے تیس اکتوبرتک دبئی میں ہوگا جبکہ شارجہ تین سے سات نومبر تک تیسرے ٹیسٹ کی میزبانی کرے گا۔

اسی بارے میں