ویرات کوہلی، غیر شائستہ حرکت کے مجرم

وراٹ کوہلی تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کوہلی پرمیچ کی پچاس فیصد فیس کا جرمانہ عائد کیا گيا ہے

بھارتی بلے باز ویرات کوہلی کو آئي سی سی کے اصولوں کی خلاف ورزی کا مرتکب پایا گیا ہے اور اس کے لیے ان پر میچ کی نصف فیس بطور جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔

سڈنی میں آسٹریلیا اور بھارت کے درمیان جاری دوسرے ٹیسٹ میچ کے دوسرے روز ویرات کوہلی کرکٹ شائقین کی طرف غیر شائستہ انداز میں انگلی اٹھاتے پائے گئے۔

ٹیسٹ میچ کے دوران یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب بھارتی گيند باز بری طرح ناکام تھے اور آ‎سٹریلیا تیزی سے سکور میں اضافہ کر رہا تھا۔

یہ واقعہ ٹی وی کیمروں نے قید کر لیا تھا اور بعد میں اسے کئی بار نشر کیا گيا ہے۔

بھارتی اخبارات نے بھی وہ تصویر شائع کی ہے جس میں کوہلی میچ شائقین کی طرف انگلی سے اشارہ کر رہے ہیں۔

اس حرکت کے لیے ان پر زبردست نکتہ چینی ہوئی ہے اور کہا جا رہا ہے کہ کھلاڑیوں کو کھیل کے دوران میدان پر اس طرح کی نازیبا حرکت قطعی قابل قبول نہیں ہونی چاہیے۔

اس واقعے کے بعد میچ کے ریفری رنجن مدگلے نے بھارتی ٹیم کے مینیجر اور ویرات کوہلی کو پیش ہونے کے لیے کہا تھا جہاں کوہلی نے اپنی غلطی تسلیم کر لی۔

ویرات کوہلی نے اس واقعے کے متعلق سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر لکھا تھا اور اپنی صفائی میں کہا ’ میں مانتا ہوں کہ کرکٹ میں پلٹ کر جواب نہیں دینا چاہیے لیکن اس وقت ہم کیا کریں جب شائقین آپ کی ماں بہن کے متعلق ہی بری باتیں کہنے لگیں۔‘

بھارتی ٹیم جب بھی آ‎سٹریلیا کا دورہ کرتی ہے تو میڈیا میں کئی پہلوؤں سے اس کے تذکرے ہوتے ہیں اور ان میں سے تنازعات کا ہونا بھی ایک اہم پہلو ہے۔

سنہ دو ہزار سات اور آٹھ کے دورے کے دوران بھی اسی طرح کا ایک تنازع اس وقت کھڑا ہوا تھا جب اینڈریو سائمنڈ نے ہربھجن سنگھ پر بندر کہنے کا الزام عائد کیا تھا۔

اس معاملے میں تو دونوں ملکوں کے درمیان سفارتی سطح پر بھی بحران پیدا ہوگيا تھا۔ بحر حال ہر بھجن سنگھ پر بھی اس وقت بھی جرمانہ عائد کیا گيا تھا۔

اسی بارے میں