دبئی: پہلے ٹیسٹ میں پاکستان کی جیت

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

انگلینڈ کو پاکستان کے خلاف دبئی ٹیسٹ کے تیسرے دن دس وکٹوں کی شکست کرکٹ کی عالمی درجہ بندی میں پہلی پوزیشن حاصل کرنے کے بعد انگلینڈ کی پہلی شکست ہے۔

انگلینڈ کو آخری بار ٹیسٹ میچ میں شکست دسمبر سنہ دو ہزار دس میں آسٹریلیا کے خلاف پرتھ میں ہوئی تھی۔

دبئی ٹیسٹ کے پہلے دن کی کہانی تیسرے دن دوہرائی گئی۔ پہلے دن انگلش بیٹنگ نے ایک سو بانوے رنز پر گھٹنے ٹیکے تھے اور تیسرے دن انگلش بیٹنگ ایک سو ساٹھ رنز پر سرنگوں ہوگئی۔

تیسرے روز کا کھیل، تصاویر

انگلش بیٹنگ کو ملیامیٹ کرنے والی پاکستانی بولنگ میں عمر گل چار وکٹوں کے ساتھ نمایاں رہے جبکہ عبدالرحمٰن اور سعید اجمل نے تین تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

سعید اجمل نے میچ میں دس وکٹیں حاصل کیں انہوں نے پہلی اننگز میں سات کھلاڑی آؤٹ کیے۔

وکٹ کیپر عدنان اکمل بھی کسی سے پیچھے نہ رہے اور انہوں نے نصف سنچری بنانے کے ساتھ ساتھ دونوں اننگز میں سات کیچ پکڑے۔

ایک سو چھیالیس رنز کے خسارے کو منافع میں بدلنے کے لئے انگلینڈ کو ایک اچھے آغاز کی ضرورت تھی لیکن نہ آغاز اچھا ہوسکا اور نہ ہی مڈل آرڈر مزاحمت کرسکی۔

کپتان سٹراس چھ رنز بناکر عدنان اکمل کے ہاتھوں کیچ ہوئے، وہ ڈی آر ایس کے فیصلے سے مطمئن نہیں تھے۔

ایلسٹر کک نے پانچ رنز پر عدنان اکمل ہی کو کیچ تھمایا اور سکور میں کسی اضافے کے بغیر کیون پیٹرسن بھی ڈیپ سکوائر لیگ پر عبدالرحمٰن کے ہاتھوں کیچ ہوکر پویلین کی راہ لینے پر مجبور ہوگئے۔

ای این بیل کو چار رنز پر سعید اجمل نے ایل بی ڈبلیو کیا اور عبدالرحمٰن نے ائین مورگن کو عدنان اکمل کے ہاتھوں کیچ کرایا تو انگلینڈ کی ٹیم چوہتر رنز پانچ کھلاڑی آؤٹ پر نوشتہ دیوار پڑھ چکی تھی۔

جوناتھن ٹراٹ اور میٹ پرائر انگلینڈ کی آخری امید تھے لیکن عمرگل کی اننگز میں چوتھی وکٹ اور عدنان اکمل کے چوتھے کیچ نے ٹراٹ کو بھی نصف سنچری سے ایک رن کم پر دبوچ لیا۔

شام کے گہرے ہوتے ہوئے سائے میں انگلش بلے بازوں کے سامنے بھی اندھیرا چھاگیا ۔عبدالرحمٰن نے لگاتار گیندوں پر سٹورٹ براڈ اور کرس ٹریملیٹ کو آؤٹ کردیا۔

جیت پر مہر تصدیق سعید اجمل نے ثبت کی جب انہوں نے گریم سوان کو اسد شفیق کے ہاتھوں کیچ کرا دیا۔

اس سے قبل پاکستان کی آخری تین وکٹیں سکور میں پچاس رنز کا اضافہ کرسکیں لیکن وکٹ کیپر عدنان اکمل کی ذمہ دارانہ بیٹنگ کے نتیجے میں پاکستان کی برتری ایک سو چھیالیس تک پہنچی۔

عدنان اکمل نے انگلش بالروں خصوصاً سوان کو بڑے اعتماد سے کھیلتے ہوئے اپنے گیارہویں ٹیسٹ میں دوسری نصف سنچری مکمل کی وہ آؤٹ ہونے والے آخری بلے باز تھے جب گریم سوان کی گیند کو باہر نکل کر کھیلنے کی کوشش میں وہ سٹمپ ہوگئے۔

عمرگل کو صفر پر براڈ کی گیند پر مورگن نے کیچ کیا جبکہ سعیداجمل بارہ رنز پر سوان کی گیند پر کک کے ہاتھوں شارٹ لیگ پر کیچ آؤٹ ہوئے۔

سعید اجمل نے امپائر بلی باؤڈن کے فیصلے پر ریویو لیا لیکن ٹی وی امپائر سٹیو ڈیوس ہاٹ اسپاٹ کو دیکھنے سے قاصر تھے لہذا انہوں نے بلی باؤڈن کو بتا دیا کہ ان کے پاس کوئی ٹھوس ثبوت نہیں کہ وہ ان کا فیصلہ تبدیل کرسکیں لہذا سعید اجمل آؤٹ قرار دیئے گئے۔

اسی بارے میں