اولمپکس میں شرکت، رینکنگ پر منحصر: اعصام

اعصام الحق تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اس سال اعصام الحق کی کتاب بھی شائع ہو جائے گی

پاکستان کے ٹینس سٹار اعصام الحق نے کہا ہے کہ اس سال ہونے والے لندن اولمپکس میں ان کی شرکت کا دارومدار ان کی عالمی درجہ بندی پر ہے اگر وہ پہلے دس کھلاڑیوں میں شامل رہے تو یقیناَ َ پاکستان کی نمائندگی کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ فرنچ اوپن کے بعد نئی عالمی درجہ بندی ہوتی ہے اور اگر میں پہلے دس کھلاڑیوں میں شامل ہوا تو میں پاکستان کے کسی بھی رینکنگ کے کھلاڑی کے ساتھ کھیل سکتا ہوں اور اس بارے میں میری عقیل خان سے بات بھی ہوچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ’ اس لیے میں نے عقیل خان سے کہا ہے کہ جتنا ہو سکے کھیل کر اپنی درجہ بندی بہتر کریں‘، جبکہ وہ خود بھی کوشش کریں گے کہ ان کی اپنی درجہ بندی بہتر رہے۔

انہوں نے کہا کہ آسٹریلین اوپن میں ان کی اپنے ساتھی راجر جولین کے ساتھ اچھی بنی رہی اور ان دونوں کا کھیلنے کا انداز تقریباً ایک ہی جیسا ہے اور دونوں جتنا مزید ایک ساتھ کھیلیں گے اتنا ہی ایک دوسرے کو بہتر سمجھ سکیں گے۔

مکس ڈبلز کے بارے میں انہوں نے مزید کہا کہ ہوسکتا ہے کہ آئندہ سال ثانیہ مرزا کے ساتھ ٹینس کھیلیں اور امید ہے کہ شعیب ملک کو اعتراض نہیں ہوگا کیونکہ ثانیہ میری بھابھی ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ یہ پورا سال جمہوریہ چیک کی اینڈریا کے ساتھ ہی کھیلیں گے کیونکہ وہ نہ صرف اچھی کھلاڑی ہیں بلکہ انہوں نے گزشتہ فرنچ اوپن کا ڈبلز ٹائٹل بھی جیتا تھا اور لندن ماسٹرز میں کوالیفائی کرنے کے لیے بھی یہ ضروری ہے کہ وہ پورا سال کسی ایک ہی ساتھی کے ساتھ کھیلیں۔

اعصام الحق کا کہنا تھا کہ وہ راجر فیڈرر کے بہت بڑے مداح ہیں مگر اس وقت نواک جوکووچ بہت اچھا کھیل پیش کر رہے ہیں اور یہ ٹینس کی ترقی کے لیے بہت اچھا ہے۔

نواک جوکووچ کے بارے میں انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال جوکووچ صرف چند میچ ہی ہارے تھے جن میں سے ایک ڈبلز کے میچ میں انہیں میں نے بھی ہرایا تھا جس پر مجھے بہت فخر ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس سال ان کی کتاب بھی شائع ہوجائےگی اور انہیں امید ہے کہ لوگ اسے پسند کریں گے۔

اسی بارے میں