کرکٹ: بھارتی حکومت سے اجازت نہیں مل رہی

پاک بھارت کرکٹ مداح تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption پاکستان اور بھارت کے درمیان آخری ٹیسٹ سیریز دو ہزار سات میں کھیلی گئی تھی

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین ذ کا اشرف نے کہا ہے کہ بھارتی کرکٹ بورڈ پاکستان کے ساتھ کرکٹ روابط بحال کرنا چاہتا ہے لیکن اسے اپنی حکومت کی طرف سے کلیئرنس نہیں مل رہی ہے۔

ذکا اشرف آئی سی سی کے اجلاس میں شرکت کے لیے ان دنوں دبئی میں ہیں اور انہوں نے بی سی سی آئی کے صدر سری نواسن سے ملاقات کی جس میں پاک بھارت کرکٹ روابط کی بحالی پر بات ہوئی۔

ذ کا اشرف نے اجلاس کے بعد بی بی سی کو دیئے گئے انٹرویو میں کہا کہ بی سی سی آئی کے صدر سری نواسن نے انہیں یقین دلایا ہے کہ وہ پاکستان کے ساتھ دوبارہ کرکٹ شروع کرنا چاہتے ہیں لیکن مسئلہ یہ ہے کہ انہیں اپنی حکومت سے کلیئرنس نہیں مل رہی ہے۔

واضح رہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان آخری ٹیسٹ سیریز دو ہزار سات میں کھیلی گئی تھی ۔

بھارتی ٹیم دو ہزار آٹھ میں ایشیا کپ کھیلنے پاکستان آئی تھی جس کے بعد سے دونوں ملکوں کے درمیان دو طرفہ کرکٹ روابط منقطع ہیں۔

ذکا اشرف نے یہ بھی بتایاکہ بنگلہ دیشی کرکٹ بورڈ اپنی سکیورٹی ٹیم اس ماہ کے وسط میں پاکستان بھیج رہا ہے جس کی رپورٹ کی روشنی میں بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم اپریل میں ون ڈے سیریز کھیلنے پاکستان جائے گی۔

بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم کے دورۂ پاکستان کے بارے میں آئی سی سی نے محتاط انداز اختیار کر رکھا ہے آئی سی سی کے چیف ایگزیکٹیو ہارون لورگارت سے جب یہ سوال کیا گیا کہ کیا آئی سی سی اس سیریز کے لیے اپنے میچ آفیشلز پاکستان بھیجے گی تو ان کا کہنا تھا کہ آئی سی سی پاکستان میں سکیورٹی کی صورتحال کا مکمل جائزہ لینے کے بعد ہی اپنے آفیشلز پاکستان بھیجے گی۔

اسی بارے میں