اجمل کا بولنگ ایکشن میں کوئی خرابی نہیں: آئی سی سی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اس سے قبل آسٹریلیا اور انگلینڈ کے خلاف سیریز میں بھی ان کے بولنگ ایکشن پر سوالات اٹھے تھے

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے پاکستانی سپنر سعید اجمل کے بولنگ ایکشن کی حمایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے بولنگ سٹائل میں کوئی خرابی نہیں دیکھی گئی ہے۔

آئی سی سی نے سعید اجمل کے ایکشن کے حوالے سے وضاحت بھارتی ذرائع ابلاغ میں آنے والی ایسی اطلاعات کے بعد کی ہے جن میں دعویٰ کیا تھا کہ بھارتی ٹیم مینجمنٹ نے سعید اجمل کے بولنگ ایکشن سے متعلق آئی سی سی کے حکام سے بات چیت کی ہے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق انڈیا کے ایک نجی چینل نےگمنام ذرائع کے حوالے سے خبر دی تھی کہ اتوار کو انڈیا اور پاکستان کے درمیان کھیلےگئے میچ کے بعد انڈیا کی ٹیم مینجمنٹ نے سعید اجمل کے ایکشن سے متعلق آئی سی سی سے بات چیت کی تھی۔

تاہم آئی سی سی کے چیف ایگزیکٹو ہارون لورگاٹ کا کہنا ہے کہ آف سپنر کے بولنگ سٹائل میں کوئی خرابی نہیں دیکھی گئی۔

انہوں نے کہا ’ہم نے اجمل کا ٹیسٹ کیا ہے، میچ کے دوران انہیں چیک اور مانیٹر کیا ہے، اور وہ مقرر کردہ حد کے اندر رہ کر بولنگ کرتے ہیں۔‘

’ہمیں اس بات کا خیال رکھنا ہوگا کہ آنکھیں کیا دیکھ رہی ہیں اور حقیقت کیا ہے۔‘

اجمل نے اس میچ میں سچن تندولکر کو آؤٹ کیا۔ اس میچ میں انڈیا نے پاکستان کو چھ وکٹوں سے شکست دی۔

یہ گزشتہ برس موہالی میں کھیلے گئے ورلڈ کپ سیمی فائنل کے بعد پاکستان اور انڈیا کا پہلا میچ تھا۔

چونتیس سالہ سعید اجمل نے 2008 میں اپنے انٹرنیشنل کیریئر کا آغاز کیا اور انہوں نے بیس ٹیسٹ اور تریسٹھ ون ڈے میچ کھیلے ہیں۔ وہ اس سے پہلے بھی کئی مرتبہ اپنے بولنگ ایکشن کے باعث خبروں میں رہے ہیں۔

ان کے بولنگ ایکشن سے متعلق پہلی شکایت 2009 میں عرب امارات میں آسٹریلیا کے خلاف ایک روزہ سیریز کے دوران میچ کے حکام کی جانب سے کی گئی تھی۔

اس کے بعد حال ہی میں عرب امارات میں انگلینڈ کے خلاف کھیلی گئی سیریز میں بھی ان کے ایکشن کے بارے میں سوال اٹھائے گئے تھے لیکن آئی سی سی اور پاکستان کرکٹ بورڈ نے سعید اجمل کے ایکشن سے متعلق اعتراضات کو رد کر دیا تھا۔

اسی بارے میں