گراں پری ریس: بحرین میں سخت حفاظتی اقدامات

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption بحرین میں سیاسی بے چینی ہے اور حکومت کے خلاف مظاہروں کے سبب گزشتہ برس کار ریسنگ کا یہی مقابلہ منسوخ کرنا پڑا تھا۔

بحرین میں گراں پری فارمولہ ون ریس کے انعقاد کے لیے سکیورٹی کے انتہائی سخت اقدمات کیےگئے ہیں۔ ادھر بحرین کی حزب مخالف نے گراں پری کو رکوانے کے لیے تین روزہ احتجاج کا اعلان کیا ہے۔

بحرین کی سکیورٹی فورسز نے جعمہ کو دارالحکومت مناما میں شعیہ آبادی کے علاقے میں مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس اور سٹن گرینیڈ کا استعمال کیا ہے۔

بحرین میں نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ گراں پری ریس کے انعقاد کے بارے میں اب بھی بے چینی پائی جاتی ہے۔

گزشتہ روز بھارتی ٹیم کی گاڑیوں پر پٹرول بم پھینکے جانے کے بعد بھارتی ٹیم نے بحرین سے واپس آنے کا فیصلہ کیا تھا۔

بھارتی ٹیم ’فورس انڈیا‘ کی گاڑیوں پر اس وقت پٹرول بم پھینکے گئے جب وہ گراں پری کے ٹریک سے واپس آ رہی تھیں۔

پولیس اور مظاہرین کے درمیان فائرنگ کے دوران اس ٹیم کی چارگاڑیاں پھنس گئیں اور پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسوگیس کے جو گولے داغے وہ کار کے اندر جا کرگرے۔

لیکن ڈرائیور بچ نکلنے میں کامیاب ہوگئے اور ’فورس انڈیا‘ ٹیم کا کوئی بھی رکن زخمی نہیں ہوا۔ اس واقعے کے بعد ٹیم سے وطن واپسی کے لیے کہا گيا۔

بعد میں ٹیم کے ارکان ٹریک سے واپسی پر بحرین کے دارالحکومت مناما کے لیے ہائي وے پر جا رہے تھے کہ اسی دوران حکومت مخالف مظاہرے وہاں تک پھیل گئے۔

بحرین میں سیاسی بے چینی ہے اور حکومت کے خلاف مظاہروں کے سبب گزشتہ برس کار ریسنگ کا یہی مقابلہ منسوخ کرنا پڑا تھا۔

اس برس بھی بہت سی ٹیموں کو اسی بات کا خدشہ تھا لیکن کسی نے بھی اس کے خلاف کھل کر آواز نہیں اٹھائي اور حکومت نے بھی خراب حالات کے باوجود مقابلہ کرانے کا فیصلہ کیا۔

بھارتی ٹیم کے چاروں افراد جو مظاہرے کے درمیان پھنس گئے تھے کافی جذباتی لگے رہے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ آخر ان تمام مسائل کے باوجود ریس کا انعقاد کیوں گيا۔

بحرین میں سرکٹ کے چیئرمین زید الزیانی کا کہنا تھا کہ ٹیم کے یہ افراد کسی کا نشانہ نہیں بلکہ اتفاق سے موقع پر تھے۔ ’میرے خیال سے یہ افسوس کی بات ہے۔ یہ وقت کا مسئلہ تھا اور یہ دنیا میں کہیں بھی ہو سکتا ہے۔ کسی فساد، لڑائی یا پھر ایسی کسی بھی چیز میں پھنس سکتا ہے۔‘

بھارتی ٹیم بحرین میں اختتام ہفتہ ہونے والے فارمولہ ون مقابلے میں حصہ لینے آئی تھی۔ اس سے قبل حکومت نے یقین دلایا تھا کہ مقالبہ پر امن رہے گا جس کے لیے سکیورٹی کے مناسب اقدامات کیےگئے ہیں۔

اس سے پہلے موٹر سپورٹس کی گورننگ باڈی ایف آئی اے نے کہا تھا کہ بحرین میں پائی جانے والی سیاسی بے چینی کے باجود وہاں فارمولا ون گراں پری ریس کا انعقاد پروگرام کے مطابق ہوگا۔

گزشتہ برس بحرین میں حکومت مخالف مظاہروں کی وجہ سے گراں پری ریس منسوخ کر دی گئی تھی۔ دو ہزار بارہ کی گلف ایئر ایف ون گراں پری بائیس اپریل کو مناما کے سخیر سرکٹ پر منعقد ہونی ہے۔

اسی بارے میں