محمد آصف رہا ہو گئے

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption محمد آصف چھتیس ایک روزہ میچ اور تئیس ٹیسٹ میچ کھیل چکے ہیں

سپاٹ فکسنگ میں ملوث ہونے کے الزام میں ایک سال قید کی سزا پانے والے پاکستانی کرکٹر محمد آصف برطانیہ کی کینٹ کاونٹی کی کینٹربری جیل سے رہا ہو گئے ہیں۔

واضح رہے کہ انتیس سالہ محمد آصف کو لندن کی ایک عدالت نے سپاٹ فکسنگ میں ملوث ہونے پر ایک سال قید کی سزا سنائی تھی لیکن انہیں آدھی سزا یعنی چھ ماہ بعد رہا کیا جا رہا ہے۔

انتیس سالہ محمد آصف کے وکیل ایس جے ایس سولیسٹرز کے مطابق محمد آصف کو جمعرات کی صبح جیل سے رہا کر دیا گیا۔

یاد رہے گزشتہ روز محمد آصف کے قریبی دوسٹ محمد ہارون نے بتایا تھا کہ ’آصف نے پہلے ہی بارہ ماہ کی سزا کے خلاف اپیل دائر کرا دی ہے اور اب وہ آئی سی سی کی جانب سے عائد کی گئی پابندی کے خلاف اپیل دائر کریں گے۔‘

آئی سی سی نے محمد آصف کے ساتھ دو دیگر پاکستانی کرکٹرز فاسٹ بولر محمد عامر اور بلے باز اور اس وقت کے کپتان سلمان بٹ کو بھی سپاٹ فکسنگ میں ملوث ہونے پر سزا سنائی تھی۔ محمد عامر گزشتہ فروری میں تین ماہ کی سزا کے بعد رہا ہو گئے تھے جبکہ سلمان بٹ کو تیس ماہ قید کی سزا دی گئی تھی۔

آئی سی سی نے ان تینوں کھلاڑیوں کے کم از کم پانچ سال تک کرکٹ کھیلنے پر پابندی عائد کی تھی۔ تاہم ان تینوں کھلاڑیوں کو اس فیصلے کے خلاف سوئٹزرلینڈ کی ایک عدالت میں اپیل دائر کرنے کا حق ہے۔

محمد آصف چھتیس ایک روزہ میچ اور تئیس ٹیسٹ میچ کھیل چکے ہیں اور ایک روزہ میچوں میں چھیالیس اور ٹیسٹ میچوں میں ایک سو چھ وکٹیں حاصل کر چکے ہیں۔

اسی بارے میں