دورۂ پاکستان: میڈیا رپورٹس بنگلہ دیش کے حوالے

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

پاکستان کرکٹ بورڈ نے بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کو چند میڈیا رپورٹس فراہم کی ہیں جن کی اسے حکم امتناعی کے مقدمے میں اپنا موقف مضبوط دکھانے کے لیے ضرورت تھی۔

یاد رہے کہ بنگلہ دیش کرکٹ ٹیم کے مجوزہ دورۂ پاکستان کے خلاف ڈھاکہ کی عدالت نے حکم امتناعی جاری کیا تھا جس کے بعد یہ دورہ ممکن نہ ہو سکا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف آپریٹنگ آفیسر سبحان احمد نے بی بی سی کے نامہ نگار عبدالرشید شکور سے بات کرتے ہوئے کہا کہ بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کو فراہم کی گئی میڈیا رپورٹس مثبت ہیں جن میں بنگلہ دیش کرکٹ ٹیم کےدورۂ پاکستان کے حق میں بات کی گئی ہے اور ان میں دو ہائی کمشنرصاحبان کے انٹرویوز بھی شامل ہیں جن میں انہوں نے کہا تھا کہ پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ ہونی چاہیے۔

سبحان احمد نے کہا کہ بنگلہ دیش کی عدالت نے جو حکم امتناعی جاری کیا تھا وہ پاکستانی اور بین الاقوامی میڈیا میں آنے والی منفی رپورٹس کی بنیاد پر جاری کیا گیا تھا۔

ان کے مطابق ان رپورٹس سے شاید یہ تاثر ملتا تھا کہ پاکستان میں بنگلہ دیش ٹیم کے لیے سکیورٹی کے جو انتظامات کیے جا رہے ہیں وہ صحیح نہیں ہیں اور اب اس کے جواب میں بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ شاید مثبت میڈیا رپورٹس عدالت میں پیش کرنا چاہتا ہے۔

سبحان احمد نے کہا کہ بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ نے دستاویزات فراہم کیے جانے کے بعد سے پاکستان کرکٹ بورڈ سے کوئی رابطہ نہیں کیا ہے اور نہ ہی پاکستان کرکٹ بورڈ کو یہ معلوم ہوسکا ہے کہ حکم امتناعی کے فیصلے کے خلاف کوئی اپیل دائر کی گئی ہے یا نہیں؟

اسی بارے میں