کیون پیٹرسن ایک روزہ کرکٹ سے ریٹائر

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption یٹرسن نے انگلینڈ کے لیے دو ہزار چار میں اپنے کرکٹ کیرئر کا آغاز کیا تھا

انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ بلے باز کیون پیٹرسن نے ایک روزہ بین الاقوامی کرکٹ کی تمام اقسام سے ریٹائرمنٹ لینے کا اعلان کیا ہے۔

اکتیس سالہ پیٹرسن اب صرف ٹیسٹ کرکٹ کھیلیں گے۔

کرکٹ بورڈ کی ویب سائٹ پر شائع ہونے بیان میں کیون پیٹرسن نے کہا ہے کہ بین الاقوامی کرکٹ کی بڑھتی ہوئی ضروریات کو پورا کرنا اب ان کے بس کی بات نہیں رہی۔

پیٹرسن کا کہنا ہے کہ ’بہت غوروخوص کے بعد میں آج بین الاقوامی ایک روزہ کرکٹ سے اپنی ریٹائرمنٹ کا اعلان کر رہا ہوں۔ میرے خیال میں یہ دوسروں کو راستہ دینےکے لیے صحیح وقت ہے تاکہ کھلاڑیوں کی نئی نسل آگے آئے اور دو ہزار پندرہ کے ورلڈ کپ کے لیے تجربہ حاصل کرے‘۔

جنوبی افریقہ میں پیدا ہونے والے پیٹرسن نے انگلینڈ کے لیے دو ہزار چار میں اپنے کرکٹ کیرئر کا آغاز کیا تھا۔ انہوں نے آٹھ سالہ کیرئر میں ایک سو ستائیس ایک روزہ میچ کھیل کر تقریباً بیالیس کی اوسط سے چار ہزار ایک سو چوراسی رنز بنائے۔

اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ ’میں ایک روزہ کرکٹ میں اپنی کارکردگی پر نازاں ہوں اور چاہتا ہوں کہ انگلینڈ کی ٹیسٹ ٹیم کی سلیکشن میں میرے نام پر غور کیا جاتا رہے‘۔

پیٹرسن کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ رواس بر سری لنکا میں ہونے والے ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے لیے ٹیم کو دستیاب ہوں گے تاہم انگلش کرکٹ بورڈ کی پالیسی ہے کہ اگر کوئی کھلاڑی پچاس اوور کی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لیتا ہے اور اسے ٹی ٹوئنٹی ٹیم میں شامل کرنے پر غور نہیں کیا جاتا۔

ای سی بی کے مینیجنگ ڈائریکٹر ہیو مورس نے پیٹرسن کے فیصلے پر افسوس ظاہر کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ’ کیون ایک شاندار کھلاڑی ہے اور ای سی بی کو مایوسی ہوئی ہے کہ انہوں نے آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی سے صرف چار ماہ قبل یہ فیصلہ کیا ہے‘۔

اسی بارے میں