باڈی بلڈر دادی اماں

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ارنسٹین شیپرڈ کا کہنا ہے کہ زندگی میں ان کا اصل مقصد دوسروں کی زیادہ صحت مند انداز میں زندگی گزارنے میں مدد کرنا ہے۔

دنیا کی سب سے عمر رسیدہ خاتون باڈی بلڈر روزانہ علی الصبح ڈھائی بجے اٹھتی ہیں اور ورزش کے لیے جم جانے سے پہلے دس میل دوڑتی ہیں۔

امریکی شہر بالٹیمور کی رہائشی ارنسٹین شیپرڈ کا اصرار ہے کہ عمر ایک ہندسے کے علاوہ کچھ نہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ انہیں اپنے چرچ کے ساتھیوں کے ساتھ ورزش کرنے میں مزہ آتا ہے۔

پچہتر سالہ ارنسٹین شیپرڈ باڈی بلڈنگ کی دنیا میں مس ارنی کے نام سے جانی جاتی ہیں۔گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈز دو ہزار گیارہ کے مطابق وہ سب سے عمر رسیدہ خاتون ہیں جو باڈی بلڈنگ مقابلوں میں شرکت کرتی ہیں۔

انہوں نے باڈی بلڈنگ اکہتر سال کی عمر میں شروع کی۔ انہوں نے بتایا کہ چھوٹی عمر میں وہ کھبی بھی کھیلوں میں حصہ نہیں لیتی تھیں۔

ان کا کہنا تھا کہ چھپن سال کی عمر میں انہوں نے اور ان کی بہن نے فیصلہ کیا تھا کہ وہ ورزش کیا کریں گے مگر وہ اس پر عمل نہیں کر سکیں۔

انہوں نے بتایا کہ ان کی بہن کی وفات کے بعد انہیں خواب میں ان کی بہن نے آ کر گلہ کیا کہ تم ہمارے فیصلے پر عمل نہیں کر رہی۔

ارنسٹین نے اس خواب کے بعد روزانہ ورزش شروع کر دی۔ان کا کہنا ہے کہ زندگی میں ان کا اصل مقصد دوسروں کی زیادہ صحت مند انداز میں زندگی گزارنے میں مدد کرنا ہے۔

ارنسٹین شیپرڈ نے کا کہنا ہے کہ اگر عمر گھٹانے کی کوئی دوا ہے تو وہ ہے ورزش!

اسی بارے میں