گال ٹیسٹ: پاکستان کو فالو آن کا خطرہ

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption جمہ کو شروع ہونے والے ٹیسٹ میچ میں سری لنکا نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا تھا

سری لنکا کے شہر گال میں کھیلے جانے والے پہلے ٹیسٹ میچ کے دوسرے دن پاکستان کی آدھی ٹیم پویلین میں واپس لوٹ گئی۔

اس سے قبل سری لنکا کی ٹیم چار سو بہّتر رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی تھی۔

پاکستان کو اننگز کے آغاز میں ہی اس وقت نقصان اٹھانا پڑا جب سترہ کے مجموعی سکور پر پاکستان کے دو کھلاڑی آؤٹ ہو گئے۔ توفیق عمر صرف نو رنز بنا کر کلاسیکرا کے ہاتھوں آؤٹ ہوئے۔

اظہر علی پہلی ہی گیند پر کلاسیکرا کے ہاتھوں آؤٹ ہوئے۔ محمد حفیظ بیس رنز بنا کر آؤٹ ہوئے جبکہ نائٹ واچ مین سعید اجمل پہلی ہی گیند پر آؤٹ ہو گئے۔

اس کے بعد اسد شفیق کھیلنے آئے جنہوں نے صرف چھ گیندیں کھیلیں اور کوئی رن نہ بنا سکے۔

سینچر کو دوسرے دن چائے کے وقفے پر کمار سنگا کارا بدقسمتی سے ڈبل سنچری نہ بنا سکے۔ وہ ایک سو ننانوے رنز پر ناٹ آؤٹ رہے۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

سعید اجمل نے 146 رنز کے عوض پانچ جبکہ محمد حفیظ نے تین اور رحمان نے ایک وکٹ حاصل کی۔

جمعہ کو شروع ہونے والے ٹیسٹ میچ میں سری لنکا نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

سری لنکا کا آغاز اچھا نہ تھا اور صرف تریسٹھ رنز کے مجموعی سکور پر اس کی پہلی وکٹ گر گئی۔

ابتدائی نقصان کے بعد سنگاکارا نے جےوردھنے کے ساتھ ملکر دوسری وکٹ کی شراکت میں ایک سو چوبیس رنز بنائے۔

سری لنکا کی اننگز کی خاص بات کمار سنگا کارا اور دلشان کی عمدہ سینچریاں تھیں۔

سنگا کارا نے پندرہ چوکوں کی مدد سے ایک سو انتالیس جبکہ دلشان نے تیرہ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے ایک سو ایک رنز بنائے۔

پاکستان کی جانب سے سیعد اجمل سب سے زیادہ کامیاب بالر رہے، انہوں نے پانچ کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

سیعد اجمل کے علاوہ محمد حفیظ نے دو جبکہ عبدالرحمن نے ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

اسی بارے میں