ومبلڈن کا بڑا اپ سیٹ، رافیل ندال کو شکست

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption رافیل ندال اس سے پہلے 2008 اور 2010 میں ومبلڈن جیت چکے ہیں

لندن میں جاری ومبلڈن گرینڈ سلام ٹینس مقابلے میں جمعرات کو اس وقت ایک بڑا اپ سیٹ ہوا جب عالمی نمبر دو سپین کے رافیل ندال دوسرے ہی راؤنڈ میں شکست کھا کر ٹورنامنٹ سے باہر ہوگئے۔

ندال کو جمہوریہ چیک کے لوکاس روسول نے پانچ سیٹ کے طویل مقابلے کے بعد شکست دی۔

یہ دو ہزار پانچ کے بعد پہلا موقع ہے کہ ندال کی کسی گرینڈ سلام مقابلے میں ابتدائی ادوار میں ہی ہار گئے ہیں۔سات سال پہلے نڈال اسی طرح ومبلڈن کے دوسرے دور میں ہار کر باہر ہوگئے تھے۔

عالمی درجہ بندی میں سوویں نمبر پر موجود لوکاس روسول نے اپنے کیریئر کے اس سب سے بڑے میچ میں پہلا سیٹ سات چھ سے ہارنے کے بعد دوسرا اور تیسرا سیٹ چھ چار کے سکور سے جیتا۔

چوتھے سیٹ میں ایک بار پھر ندال نے چھ دو سے کامیابی حاصل کر کے میچ برابر کردیا۔ تاہم روسول نے پانچواں اور فیصلہ کن سیٹ چھ چار سے جیت کر میچ جیت لیا۔

روسول پہلی بار ومبلڈن ٹورنامنٹ کے مرکزی ڈرا میں کھیل رہے ہیں۔ اس سے پہلے وہ پچھلے پانچ برس سے كوالیفائنگ راؤنڈز کے بھی پہلے ہی دور میں ہار رہے تھے۔

اس جیت کے بعد روسول نے کہا کہ ’میرے لیے یہ ایک كرشمے کی طرح ہے۔ میں نے کبھی اس کا تصور نہیں کیا تھا۔ وہ ایک سپر سٹار ہیں مگر میں آج کافی قابل اعتماد طریقے سے کھیلا۔ میں امید کرتا ہوں کہ ایک اور میچ میں ایسا ہی کھیل پاؤں گا‘۔

رافیل ندال اس سے پہلے 2008 اور 2010 میں ومبلڈن جیت چکے ہیں۔وہ گزشتہ پانچ گرینڈ سلام مقابلوں کے فائنل میں پہنچے ہیں اورگزشتہ پانچ سال سے ومبلڈن کا فائنل بھی کھیل رہے تھے۔

اسی بارے میں