گول لائن ٹیکنالوجی کی منظوری دے دی گئی

فٹبال تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption گول لائن ٹیکنالوجی کی ضرورت یورو 2012 ٹورنامنٹ میں یوکرین اور انگلینڈ کے درمیان ہونے والے ایک میچ کے دوران بری طرح محسوس کی گئی

انٹرنیشنل فٹبال ایسوسی ایشن بورڈ نے جمعرات کو فٹبال کے کھیل میں گول لائن ٹیکنالوجی سسٹم کو استعمال کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

اجلاس میں ’ہاک آئی‘ اور ’گول ریف‘ سسٹم کے نتائج پر غور کرنے کے بعد ان کے استعمال کی منظوری دی گئی۔

پریمیئر لیگ اور فٹبال ایسوسی ایشن یہ ٹیکنالوجی اپنے مقابلوں میں استعمال کریں گے۔

انگلش ایف اے، سکاٹ لینڈ، ویلز اور شمالی آئرلینڈ کا انفرادی طور پر ایک ایک ووٹ ہے جبکہ فٹبال کی منتظم تنظیم فیفا کے چار ووٹ تھے۔

فٹبال کے کسی بھی قانون میں تبدیلی کے لیے آٹھ میں سے کم از کم چھ ووٹ درکار ہوتے ہیں۔

پریمیئر لیگ یہ سسٹم سنہ 13-2012 کے سیزن میں استعمال کرے گا ۔ اس کے علاوہ دسمبر میں ہونے والے فیفا کلب ورلڈ کپ میں بھی استعمال کیا جائے گا اور اگر یہ تجربہ کامیاب رہتا ہے تو پھر کنفڈریشن کپ اور پھر 2014 کے ورلڈ کپ میں استعمال کیا جائے گا۔

ہاک آئی کیا ہے؟

ہاک ہائی سسٹم میں ہر گول میں چھ کیمرے استعمال کیے جاتے ہیں تاکہ بال پر نظر رکھی جا سکے۔ یہ سسٹم فٹبال کی صحیح جگہ بتاتا ہے اور جب فٹبال گول لائن کراس کر لیتا ہے تو یہ ریڈیو سگنل ریفریز کے ہاتھوں میں بندھی ہوئی گھڑیوں میں پہنچتا ہے جس سے پتہ چلتا ہے کہ گول ہوا ہے کہ نہیں۔

گول ریف سسٹم کیا ہے؟

گول ریف سسٹم میں فٹبال کے اندر ایک مائیکروچپ لگا ہوتا ہے اور گول کے گرد ہلکی مقناطیسی شعاعیں ہوتی ہیں۔ گول لائن پر یا اس کے اندر مقناطیسی فیلڈ میں کسی بھی تبدیلی کا سسٹم کو پتہ چل جاتا ہے جس کو یہ بتاتا ہے کہ گول ہوا ہے کہ نہیں۔

اجلاس میں اس بات پر بھی فیصلہ متوقع ہے کہ مسلم خواتین فٹبالروں کو سر ڈھانکنے کے لیے خاص قسم کے سکارف کی اجازت ہونی چاہیے یا نہیں۔

اسی بارے میں