ومبلڈن فائنل:اینڈی مرے بمقابلہ راجر فیڈرر

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption اگر فیڈرر فائنل جیتنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں تو یہ ان کا ساتواں ومبلڈن ٹائٹل ہو گا

ومبلڈن ٹینس ٹورنامنٹ کے سنگلز فائنل میں آج برطانوی ٹینس کھلاڑی اینڈی مرے کا مقابلہ سولہ بار گرینڈ سلام حاصل کرنے والے راجر فیڈرر سے ہو گا۔

برطانوی عوام کو اس فائنل میچ کا شدت سے انتظار ہے کیونکہ اینڈی مرے 74 سال بعد پہلے برطانوی کھلاڑی ہیں جو ومبلڈن کے فائنل میں پہنچے ہیں۔

اس سے پہلے سنہ انیس سو چھتیس میں برطانوی کھلاڑی فریڈ پیری نے ومبلڈن جیتا تھا۔

توقع ہے کہ ٹیلی ویژن پر دو کروڑ لوگ اس فائنل کو دیکھیں گے۔

اینڈی مرے نے ایک بیان میں کہا ہے کہ’راجر فیڈرر کو شکست دینا ایک بڑا چیلنج ہے اور انہیں اتوار کو بہت مدد کی ضرورت ہو گی۔‘

انہوں نے کہا کہ’مجھے امید ہے کہ تمام شائقین ان کے ساتھ ہونگے اور مجھے بڑی خوشی ہے کہ ٹورنامنٹ کے آخری میچوں کے مشکلات لحمات میں انہوں نے میرا ساتھ دیا۔‘

جمعہ کو اینڈی مرے کے فائنل میں پہنچنے کے ساتھ ہی بڑی تعداد میں مداح انہیں نیک تمناؤں کے پیغامات بھیج رہے ہیں۔

برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے کہا ہے کہ’یہ بڑی خوشی کی خبر ہے کہ ہماری سرزمین کا کھلاڑی ستر برس بعد ایک ایسے وقت ومبلڈن کے فائنل میں پہنچا ہے جب اولپمکس شروع ہو رہے ہیں اور دنیا کی نگاہیں برطانیہ پر مرکوز ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اینڈی مرے 74 سال بعد پہلے برطانوی کھلاڑی ہیں جو ومبلڈن کے فائنل میں پہنچے ہیں

مرے کی حمایت میں اتوار کو وزیر اعظم کی سرکاری رہائش گاہ ٹین ڈاؤنگ سٹریٹ پر یونین جیک کے ساتھ سکاٹ لینڈ کا پرچم لہرایا جائے گا۔

سکاٹ لینڈ کے فرسٹ منسٹر ایلکس سیلمونڈ نے ایک پیغام میں کہا ہے کہ’تمام سکاٹ لینڈ مرے کے ساتھ کھڑا ہو گا اور اور وہ خود پذیرائی کے لیے میدان میں موجود ہونگے۔‘

سیمی فائنل میں اینڈی مرے نے ولفرائیڈ سونگا کو چھ تین، چھ چار، تین چھ اور سات پانچ سے شکست دی تھی۔

سوئٹزر لینڈ کے ٹینس سٹار راجر فیڈرر نے سیمی فائنل میں دفاعی چیمپیئن سربیا کے نواک یوکووِچ کو شکست دی تھی۔

فیڈرر نے یوکووچ کو ہرا کر ومبلڈن ٹورنامنٹ میں تاریخ رقم کی ہے۔ وہ ٹینس کے پہلے کھلاڑی ہیں جو اپنا آٹھواں ومبلڈن فائنل کھیلیں گے۔

اگر فیڈرر فائنل جیتنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں تو یہ ان کا ساتواں ومبلڈن ٹائٹل ہو گا۔

اسی بارے میں