بھارت پاک کرکٹ سیریز دسمبر میں

بھارت اور پاکستان کے کرکٹ شائقین تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption بھارت کا کہنا ہے کہ کرکٹ کے روابط کی بحالی میں سیکورٹی کے مسائل کو بھی مد نظر رکھنا ہوگا

بھارتی کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ بھارت اور پاکستان کے درمیان کرکٹ کا کھیل دوبارہ شروع ہوگا اور آئندہ دسمبر میں ون ڈے میچوں کی سیریز کھیلنے کے لیے پاکستانی ٹیم بھارت کا دورہ کریگي۔

بھارتی کرکٹ بورڈ بی سی سی آئی کی دلی میں پیر کو ہونے والی ایک میٹنگ کے دوران اس کا فیصلہ کیا گيا۔ میٹنگ کے بعد ایک بیان میں کہا گيا ہے کہ ایک مختصر سیریز دسمبر دو ہزار بارہ اور جنوری دو ہزار تیرہ میں رکھی گئي ہے۔

بی سی سی آئی کا کہنا ہے کہ اس مجوزہ سیریز سے متعلق جو مزید کارروائیاں ہونی ہیں انہیں جلد ہی پورا کر لیا جائیگا۔

اطلاعات کے مطابق تین میچوں کی ون ڈے سیریز کرسمس کی تعطیلات کے دوران کھیلی جائے گی لیکن بھارتی کرکٹ بورڈ کو ابھی اس بارے میں حکومتِ ہند سے منظوری لینی ہے۔

بھارتی خبر رساں ادارے پی ٹی آئی کے مطابق ورکنگ کمیٹی کی میٹنگ ختم ہونے کے بعد بورڈ کے ایک سینیئر اہلکار نے بتایا کہ ’پاکستانی ٹیم کی میزبانی کے لیے حکومت اصولی طور پر تیار ہے‘۔

اگر حکومت نے بورڈ کے اس فیصلے کو باقاعدہ منظوری دیدی تو دو ہزار سات کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان یہ پہلی کرکٹ سیریز ہوگی۔

دو ہزار آٹھ میں ممبئی پر حملے کے بعد سے دونوں ملکوں کے درمیان کرکٹ کی کوئی دوطرفہ سیریز نہیں کھیلی گئی ہے۔

طے شدہ پروگرام کے مطابق جنوری دو ہزار نو میں بھارت کو پاکستان کا دورہ کرنا تھا لیکن بھارتی ٹیم نے سکیورٹی وجوہات کے سبب یہ دورہ منسوخ کر دیا تھا۔

اس کے بدلے میں خير سگالی کے طور پر سری لنکا کی ٹیم نے پاکستان کا دورہ کیا تھا جہاں تین مارچ کو لاہور میں دہشت گردوں نے ٹیم کو نشانہ بنایا تھا۔ اس کے بعد سے کسی بھی بیرونی ٹیم نے پاکستان کا دورہ نہیں کیا ہے۔

دو ہزار گيارہ میں ہونے والے ورلڈ کپ کے جو میچز پاکستان میں ہونے تھے انہیں بھی سکیورٹی کے خدشات کی بناء پر آئي سی سی نے بر صغیر کے دوسرے ممالک میں کرایا تھا۔

کچھ روز پہلے پاکستان کے سیکریٹری خارجہ جلیل عباس جیلانی نے بھارت کا دورہ کیا تھا اور بات چيت کے بعد کہا گيا تھا کہ دونوں ملکوں کے سکریٹری خارجہ نے کرکٹ کی بحالی پر بھی بات چیت کی تھی۔

اطلاعات کے مطابق گزشتہ ہفتے پاکستان کرکٹ بورڈ کے سربراہ ذکاء اشرف نے کرکٹ کی بحالی کے لیے تین تجاویز پیش کی تھیں۔

اس میں کہا گيا تھا کہ بھارت پاکستان کا دورہ کرے یا پھر بھارت پاکستان کے ساتھ کسی نیوٹرل مقام پر میچ کھیلے یا پھر پی سی بی کو اپنی ہوم سیریز بھارت میں منعقد کرنے کی اجازت دے۔

اسی بارے میں