فلپس ایدو سے میڈیکل ریکارڈ طلب

فلپس ایدووو تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

برطانوی اولمپک ایسوسی ایشن نے ٹرپل جمپر فلپس ایدو سے ان کی کولہے کی چوٹ کی تفصیلات طلب کی ہیں جس کے باعث وہ تربیتی کیمپ میں حصہ نہیں لے سکے۔

تینتیس سالہ فلپس نے سات اگست کو جمپ کے ایونٹ میں حصہ لینا ہے۔ وہ برطانوی ٹیم کے ہمراہ پرتگال میں لگے کیمپ میں نہیں گئے تھے۔

برطانوی اولمپکس ایسوسی ایشن کے چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر این مییکرڈی نے ایک خط کے ذریعے فلپس سے ان کی چوٹ کی تفصیلات طلب کی ہیں۔

فلپس سے امید کی جا رہی ہے کہ وہ اولمپکس میں طلائی تمغہ جیتیں گے۔ تاہم انہوں نے سنہ دو ہزار بارہ میں اب تک صرف تین بار کھیلوں میں حصہ لیا ہے اور حال ہی میں ہوئے لندن گراں پری میں حصہ نہیں لیا۔

فلپس نے چار سال قبل بیجنگ اولمپکس میں چاندی کا تمغہ جیتا تھا۔

سنہ 2009 کے ورلڈ چیمپیئن کو اچھی فارم میں آنے میں مشکل پیش آ رہی ہے۔ حال ہی میں ان کی بہترین جمپس یا چھلانگیں 16.43 اور 17.05 میٹر کی تھیں جبکہ اس سے قبل وہ 17.81 میٹر کی چھلانگ لگا چکے ہیں۔ اس سیزن کی عالمی رینکنگ میں وہ دسویں نمبر پر ہیں۔

برطانوی اولمپک ایسوسی ایشن کے ترجمان ڈیرل سیبل کا کہنا ہے ’ہمارے چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر ایئن میککرڈی نے فلپس اور ان کے ایجنٹ کو لکھا ہے کہ ان کی چوٹ اور علاج کی تفصیلات فراہم کی جائیں۔ یہ تفصیلات مہیا کی جانی چاہیئیں اور ان کو راز میں رکھا جائے گا۔‘

انہوں نے مزید کہا ’کھلاڑیوں کے ساتھ معاہدے میں یہ لکھا ہوا ہے کہ کھلاڑی کو اپنی چوٹ اور اس کے علاج کے بارے میں ایسوسی ایشن کو مطلع کرنا ہو گا۔ اور اسی لیے یہ تفصیلات مانگی گئی ہیں۔‘

فلپس کے کوچ ایسٹن مور نے پیر کے روز کہا تھا کہ فلپس نے لندن ہی میں رہ کر علاج کرنے کا فیصلہ کیا تھا اور اسی لیے وہ پرتگال نہیں جا سکے۔

اسی بارے میں