لندن اولمپکس: چینی کوچ معافی کے طلبگار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ’یہ میرا آخری مقابلہ تھا۔ بیڈمنٹن کی عالمی فیڈریشن کو الوادع، میرے پسندیدہ کھیل بیڈمنٹن کو بھی الوادع‘۔

لندن اولمپکس میں چین کی بیڈمنٹن ٹیم کے ہیڈ کوچ نے دو چینی کھلاڑیوں کو جان بوجھ کر میچ ہارنے پر نااہل قرار دیے جانے کے بعد اس معاملے میں اپنے کردار پر معافی طلب کی ہے۔

چین کی یو یئینگ اور وانگ زیاؤلی کے علاوہ جنوبی کوریا کی چار اور انڈونیشیا کی دو آٹھ خاتون کھلاڑیوں کو اپنے میچ جیتنے کی بھرپور کوشش نہ کرنے پر مقابلوں سے باہر کر دیا گیا ہے۔

لی یونگ بو کا کہنا ہے کہ ’میں ہی اس کا ذمہ دار ہوں‘۔ چین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی زنہوا کے مطابق ان کا کہنا تھا کہ ’بطور ہیڈ کوچ مجھے چینی بیڈمنٹن اور چین کے ٹی وی ناظرین سے معافی مانگنی ہے‘۔

ادھر ڈس کوالیفائی کی جانے والی چینی جوڑی کی رکن یو یئینگ نے بیڈمنٹن کا کھیل ہی چھوڑ دینے کا اعلان کیا ہے۔ انہوں نے چینی مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ویبو پر لکھا ہے کہ ’یہ میرا آخری مقابلہ تھا۔ بیڈمنٹن کی عالمی فیڈریشن کو الوادع، میرے پسندیدہ کھیل بیڈمنٹن کو بھی الوادع‘۔

ڈس کوالیفائی کی جانے والی دوسری چینی کھلاڑی وانگ زیاؤلی کا کہنا ہے کہ مقابلے کے نئے قوانین میں موجود خرابیوں کی قیمت کھلاڑیوں نے ادا کی ہے۔ ویبو پر ہی اپنے پیغام انہوں نے کہا کہ جو چیز منسوخ کی گئی وہ صرف میچ نہیں بلکہ میرا خواب تھا جو ریزہ ریزہ ہوگیا ہے‘۔

یو یئینگ کے مطابق وہ دونوں مقابلے کے نئے نظام اور قوانین کو تول رہی تھیں تاکہ وہ بہتر کارکردگی دکھا سکیں۔ ’یہ اتنی سادہ بات ہی ہے۔ اس میں کچھ پیچیدہ نہیں لیکن اس کے لیے کوئی معاف کرنے کو تیار نہیں‘۔

چین کی یو یئینگ اور وانگ زیاؤلی اور جنوبی کوریا کی جونگ کیونک یون اور کم ہانا پر جس میچ میں دلجمعی سے نہ کھیلنے کا الزام لگا تھا اس میں سب سے لمبی ریلی صرف چار شاٹس پر مشتمل تھی اور میچ کے دوران ریفری نے ایک مرتبہ کورٹ پر آ کر کھلاڑیوں کو تنبیہ بھی کی تھی۔

اس میچ سے قبل یہ دونوں ٹیمیں کوارٹر فائنل کے لیے کوالیفائی کر چکی تھیں اور دونوں ہی یہ میچ ہار کر کوارٹر فائنل میں آسان حریف کا سامنا کرنے کی متمنی تھیں۔

لندن اولمپکس میں اس مرتبہ بیڈمنٹن کے مقابلے ناک آؤٹ کی بجائے راؤنڈ رابن طرز پر کھیلے جا رہے ہیں اور اس میں ایک میچ ہارنے کی صورت میں ممکنہ طور پر اگلا میچ ایک آسان حریف سے ہو سکتا ہے۔

ادھر چینی بیڈمنٹن فیڈریشن نے عالمی بیڈمنٹن فیڈریشن کی جانب سے کھلاڑیوں کو مقابلوں سے خارج کیے جانے کا فیصلہ تسلیم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

جنوبی کوریا نے اپنی چار کھلاڑیوں کے اخراج کے خلاف اپیل کی جسے رد کر دیا گیا جبکہ انڈونیشیا نے اپنی اپیل واپس لے لی ہے۔

اسی بارے میں