ریلے ریس میں جمیکا کا نیا عالمی ریکارڈ

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption یہ یوسین بولٹ کا چھٹا اولمپک گولڈ میڈل ہے

لندن اولمپکس کے پندرہویں دن جمیکن ایتھلیٹس نے مردوں کی 4x100 میٹر ریلے دوڑ میں نیا عالمی ریکارڈ قائم کیا ہے اور اس ٹیم کے رکن کی حیثیت سے یوسین بولٹ نے لندن اولمپکس میں طلائی تمغوں کی ہیٹ ٹرک مکمل کر لی ہے۔

جمیکن ٹیم یوسین بولٹ کے علاوہ یوہان بلیک، نیسٹا کارٹر اور مائیکل فریٹر پر مشتمل تھی اور ان چاروں ایتھلیٹس نے مقررہ فاصلہ چھتیس اعشاریہ آٹھ چار سیکنڈ میں طے کر کے نیا عالمی اور اولمپک ریکارڈ قائم کیا۔

اس سے پہلے بھی یہ عالمی ریکارڈ جمیکا کے ہی نام تھا اور جمیکن ٹیم نے سنہ دو ہزار گیارہ میں ڈیگو میں منعقدہ ایتھلیٹکس کی عالمی چمپیئن شپ میں یہ ریس سینتیس اعشاریہ صفر چار سیکنڈ میں مکمل کی تھی۔

سنیچر کو لندن کے اولمپک پارک میں ہونے والی ریس میں امریکی ٹیم کے نقرئی اور ٹرینیڈاڈ اینڈ ٹوباگو کی ٹیم نے کانسی کا تمغہ جیتا۔

ابتدائی طور پر کینیڈا کی ٹیم کو کانسی کا تمغہ دیا گیا لیکن اس ٹیم کے ریس کے دوران دوسری ٹیم کی لین میں قدم رکھنے پر ڈس کوالیفائی ہونے کے بعد تیسری پوزیشن ٹرینیڈاڈ اینڈ ٹوباگو کو مل گئی۔

یہ لندن اولمپکس میں یوسین بولٹ کا تیسرا طلائی تمغہ ہے۔ اس سے قبل وہ سو اور دو سو میٹر کی دوڑ میں بھی گولڈ میڈل جیت چکے ہیں۔ انہوں نے بیجنگ اولمپکس میں بھی انہی تینوں مقابلوں میں طلائی تمغے جیتے تھے۔

اولمپکس میں ایتھلیٹکس میں سب سے زیادہ تمغے جیتنے والوں کی فہرست میں بولٹ اب تیسرے نمبر پر آ گئے ہیں۔

امریکہ کے کارل لوئیس اس فہرست میں پہلے نمبر پر ہیں۔ انہوں نے انیس سو چوراسی سے انیس سو چھیانوے کے درمیان چار اولمپکس مقابلوں میں نو طلائی تمغوں سمیت دس تمغے جیتے تھے۔

اس فہرست میں دوسرا نام امریکہ کے ہی رے ایوری کا ہے۔ انہوں نے سنہ انیس سو سے انیس سو آٹھ کے دوران تین اولمپکس میں آٹھ گولڈ میڈل حاصل کیے تھے۔

اسی بارے میں