نیوزی لینڈ کو دو سو چوالیس رنز کی برتری

آخری وقت اشاعت:  اتوار 2 ستمبر 2012 ,‭ 11:40 GMT 16:40 PST

پہلی اننگز میں سنچری بنانے والے ٹیلر دوسری اننگز میں پینتیس رنز ہی بنا سکے

بھارت اور نیوزی لینڈ کے درمیان جاری دوسرے ٹیسٹ میچ کے تیسرے دن کھیل کے اختتام پر نیوزی لینڈ کو بھارت پر دو سو چوالیس رنز برتری حاصل ہے جبکہ اس کی ایک وکٹ باقی ہے۔

جب کھیل ختم ہوا تو نیوزی لینڈ نے دوسری اننگز میں دو سو بتیس رنز بنائے تھے اور پٹیل اور بولٹ کریز پر موجود تھے۔

کلِک میچ کے تازہ اسکور کارڈ کے لیے یہاں کلک کریں

دوسری اننگز میں نیوزی لینڈ کے بلے باز بڑی اننگز کھیلنے میں ناکام رہے ہیں اور وقفے وقفے سے وکٹیں گرنے کا سلسلہ جاری رہا۔

اس اننگز کی سب سے بڑی شراکت جیمز فرینکلن اور وین وک کے درمیان پچپن رنز کی ہوئی۔

بھارت کی جانب سے روی چندرن ایشون نے پانچ جبکہ پرگیان اوجھا اور امیش یادو نے دو، دو وکٹیں لی ہیں۔

اس سے قبل بھارت کی پوری ٹیم اپنی پہلی اننگز میں تین سو ترپن رنز بنا کر آؤٹ ہوئی اور یوں نیوزی لینڈ کو پہلی اننگز میں بارہ رنز کی سبقت ملی تھی۔

بھارتی اننگز کی خاص بات ویرات کوہلی کی سنچری اور مہندر سنگھ دھونی اور سریش رائنا کی نصف سنچریاں تھیں۔ یہ کوہلی کی ٹیسٹ کرکٹ میں دوسری سنچری تھی۔

ویرات کوہلی

ویرات کوہلی نے اپنی دوسری ٹیسٹ سنچری مکمل کی

کوہلی چودہ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے ایک سو تین جبکہ دھونی اور رائنا بالترتیب باسٹھ اور پچپن رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

نیوزی لینڈ کی جانب سے ٹم ساؤدی نے عمدہ بولنگ کرتے ہوئے چونسٹھ رنز کے عوض سات کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھلائی۔

اس ٹیسٹ میں نیوزی لینڈ کے کپتان راس ٹیلر نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ کیا تھا اور نیوزی لینڈ کی ٹیم اپنی پہلی اننگز میں تین سو پینسٹھ رنز بناکر آؤٹ ہو گئی تھی۔

دو میچوں کی اس سیریز میں بھارت ایک صفر سے آگے ہے۔ پہلے میچ میں بھارت نے نیوزی لینڈ کو ایک اننگز اور ایک سو پندرہ رنز سے شکست دی تھی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔