ہر چیز بِکے کرکٹ کے نام پر

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 20 ستمبر 2012 ,‭ 03:04 GMT 08:04 PST

جگہ جگہ ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کی کسی نہ کسی انداز میں تشہیر ہو رہی ہے

سری لنکا میں ورلڈ ٹی ٹوئنٹی مقابلوں کی تیاریاں سال بھر پہلے منعقد ہونے والے عالمی کپ کا تسلسل دکھائی دیتی ہیں اور دارالحکومت کولمبو میں ہر طرف کرکٹ کے رنگ بکھرے دکھائی دیتے ہیں۔

کولمبو ائرپورٹ پر اترنے والے مسافروں کو ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں شریک ممالک کے پرچموں کے ساتھ ساتھ ایونٹ کے تشہیری بورڈ دیکھ کر اندازہ ہوجاتا ہے کہ یہ موقع کرکٹ کا ہے لیکن سب کی نگاہیں مختلف کرکٹرز کی بیٹنگ اور بولنگ ایکشن والے کٹ آؤٹس پر آکر ٹھہر جاتی ہیں جو ائرپورٹ کی عمارت میں جگہ جگہ لگے ہوئے ہیں۔

ان میں واٹسن بھی ہیں جے وردھنے بھی اور اپنے شاہد آفریدی بھی۔

ڈیوٹی فری شاپس پر مختلف مصنوعات کی خریدی پر لکی ڈرا کی تختیاں بھی مسافروں کو ایک لمحے کے لیے رکنے پر مجبور کردیتی ہیں۔

شہر میں آجائیں تو یہاں بھی جگہ جگہ ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کی کسی نہ کسی انداز میں تشہیر ہو رہی ہے۔

ورلڈ کپ کی طرح اس بار بھی پر چیز کی فروخت میں ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کا اثر ضرور جھلک رہا ہے کہیں بڑے انعامات دینے کی ترغیب ہے تو کہیں میچز کے ٹکٹوں کی لالچ۔

جب کھیلوں کے بڑے مقابلے ہوں تو کمانے کے کئی راستے کھل جاتے ہیں مارکیٹوں میں ان مقابلوں کی ٹی شرٹس، ٹوپیاں اور کئی دوسری چیزیں فروخت کے لیے پیش کر دی جاتی ہیں جنہیں سووینئرز سمجھ کر خریدا جاتا ہے ۔

کولمبو کے بازاروں میں ورلڈ ٹوئنٹی کے نام کی ٹی شرٹس اور دوسری چیزیں موجود ہیں لیکن یہ اصلی نہیں یعنی جس نے بھی چاہا اسے تیار کر کے مارکیٹ میں پہنچا دیا جس پر آئی سی سی حرکت میں آئی ہے اور مقامی پولیس نے ایسی کئی دکانوں پر چھاپے مارے ہیں جہاں غیرمنظور شدہ چیزیں فروخت کی جا رہی تھیں۔

دولت مشترکہ کے سیمینار اور اس ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کی وجہ سے کولمبو میں جیسے ہوٹل کم پڑ گئے ہیں اور جو ہیں ان کے کرائے بیس اوورز کی کرکٹ کی طرح تیزی سے بڑھ گئے ہیں۔

اس ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں صدر راجا پاکسے کے علاقے ہمبنٹوٹا سے لے کر پالی کلے اور کولمبو سے لے کرگال تک کو شامل کیا گیا ہے لیکن کسی زمانے میں بین الاقوامی کرکٹ کا مرکز دمبولا کسی بھی میچ کی میزبانی حاصل نہیں کرسکا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔