سنیل نارائن: ویسٹ انڈیز کیلیے ترپ کا پتا

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 27 ستمبر 2012 ,‭ 22:54 GMT 03:54 PST

سری لنکا کے شہر پالیکیلے میں ٹی ٹوئنٹی کرکٹ کے عالمی کپ کے جمعرات کو انگلینڈ اور ویسٹ انڈیز کے درمیان ہونے والے میچ میں ویسٹ انڈیز کی ٹیم انگلینڈ کے جارحانہ بلے بازوں کے خلاف سحر انگیز سپنر سنیل نارائن کو ٹیم میں شامل کرے گی۔

برطانوی خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق ویسٹ انڈیز کے کپتان ڈیرن سیمی نے اخبار نویسوں کو بتایا کہ سنیل ان کا ترپ کا پتا ہے اور اُس نے ٹی ٹوئنٹی طرز کی کرکٹ میں ویسٹ انڈیز کے لیے اچھا کھیلا ہے۔ انہوں نے کہا کہ امید ہے کہ انگلینڈ کے بلے بازوں کو کے لیے وہ کارگر ثابت ہوں گے۔

ویسٹ انڈیز کے کپتان نے کہا کہ اگر سری لنکا کے ماحول میں سنیل کو وکٹ سے کوئی مدد ملتی ہے تو وہ کافی موثر ہوں گے۔

سنیل نارائن انڈین پریمیئر لیگ کے میچوں میں کافی کارگر رہے ہیں لیکن انگلینڈ کے ویسٹ انڈیز کے دورے کے دوران وہ صرف ایک انگلش کھلاڑی کو آؤٹ کر پائے تھے۔

سنیل نارائن کی گیندوں کا تنوع برصغیر کے ماحول میں زیادہ کارگر ہو سکتا ہے جہاں پر انگلینڈ کے کھلاڑی کمزور دکھائی دیتے ہیں اور جیسا کہ بھارت کے خلاف میچ میں انگلینڈ کی پوری ٹیم صرف اسی رن بنا سکی اور بھارت کے دو سپنروں ہربجن سنگھ اور پیوش چاولہ نے مجموعی طور پر چھ ووکٹیں حاصل کئیں۔

ڈیرن سیمی نے کہا کہ ان کی ٹیم کو انگلینڈ کی ٹیم کو بڑا سکور کرنے سے روکنا ہوگا۔

"کرس گیلز جب سے واپس ٹیم میں آئے ہیں بڑی اچھی کارکردگی دکھا رہے ہیں اور ان کے مداح انھیں کا کھیل دیکھنا چاہتے ہیں۔ میں امید کرتا ہوں کہ کرس گیلز ایسے ہی کھلتے رہیں گے۔"

سیمی

انہوں نے کہا کہ اب تک کے میچوں میں بہت سکور ہوا ہے اور ان کی ٹیم کو انگلینڈ کو مناسب سکور پر روکنا بڑا ضروری ہوگا۔

سیمی نے مزید کہا کہ ان کے تباہ کن بلے باز کرس گیلز بھی میچ جیتنے میں اہم ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کرس گیلز جب سے واپس ٹیم میں آئے ہیں بڑی اچھی کارکردگی دکھا رہے ہیں اور ان کے مداح انھیں کا کھیل دیکھنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ امید کرتے ہیں کہ کرس گیلز ایسے ہی کھلتے رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ جمعرات کا میچ بہت مزیدار اور کڑا ہو گا اور اگر ویسٹ انڈیز جیت گیا تو شائقین کرکٹ بہت خوش ہوں گے۔

انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے کپتان سٹیورٹ براڈ نے کہا کہ پالیکیلے کا میدان ویسٹ انڈیز کے میدانوں جیسا ہے جہاں پر انگلینڈ نے گزشتہ ٹی ٹوئنٹی جیتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ جتنی جلدی ان کی ٹیم اس ماحول سے مانوس ہوجاتی ہے اتنا ہی اچھا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ٹی ٹوئنٹی عالمی کپ کا دفاع کرنے کے لیے انھیں صرف پانچ میچ جیتنے ہیں۔ لیکن وہ اس کو اس طرح نہیں دیکھتے بلکے وہ ہر میچ کو علیحدہ علیحدہ دیکھتے ہیں اور ویسٹ انڈیز کے میچ کو بھی وہ آسان خیال نہیں کر رہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ موسم گرما میں وہ ویسٹ انڈیز کے خلاف کھیل چکے ہیں اور ویسٹ انڈیز کی ٹیم اچھی ٹیم ہے اور ان کے کئی کھلاڑی آئی پی ایل میں بھی کھیل رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کے خلاف کم سکور کرنے پر ان کی ٹیم پریشان نہیں ہے۔

ٹی ٹوئنٹی عالمی کپ کے مقابلوں میں کل دوسرا میچ میزبان سری لنکا اور نیوزی لینڈ کے درمیان کھیلا جائے گا۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔