ایک جرم کی دو سزائیں نہیں ہوسکتیں، ذکاءاشرف

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 4 اکتوبر 2012 ,‭ 10:21 GMT 15:21 PST
ذکاء اشرف

پاکستانی کرکٹ بورڈ نے عبدالرحمان سے متعلق انگلینڈ سے تفصیلات طلب کی ہیں

پاکستان کرکٹ بورڈ نے لیفٹ آرم سپنر عبدالرحمٰن کے معاملے پر انگلینڈ کرکٹ بورڈ سے قانونی اور طبی تفصیلات طلب کر لی ہیں تاہم ان کے خلاف کسی سخت کارروائی کا امکان نہیں ہے۔

واضح رہے کہ انگلش کاؤنٹی سمرسٹ کی نمائندگی کرنے والے عبدالرحمٰن پر مثبت ڈوپ ٹیسٹ کے نتیجے میں تین ماہ کی پابندی عائد کی گئی ہے۔ طبی رپورٹ کے مطابق انہوں نے چرس کا استعمال کیا تھا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین ذکاء اشرف جو ان دنوں کولمبو میں ہیں بی بی سی کو دیےگئے انٹرویو میں بتایا کہ یہ واقعہ افسوسناک ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس سلسلے میں انگلینڈ کرکٹ بورڈ سے رابطہ کیا ہے اور اس سے کہا ہے کہ عبدالرحمٰن کے تمام میڈیکل ٹیسٹ اور اس معاملے میں قانونی پہلوؤں سے متعلق جو بھی تفصیلات ان کے پاس ہیں وہ پاکستان کرکٹ بورڈ کو بھیجی جائیں تاکہ اس کی روشنی میں پاکستان کرکٹ بورڈ بھی اگر کوئی فیصلہ کرنا چاہے تو وہ کرسکے۔

ذکاء اشرف نے کہا کہ یہ واقعہ انگلینڈ میں پیش آیا اور انہیں وہیں کے قواعد وضوابط کے تحت ان پر تین ماہ کی پابندی عائد کی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ اس معاملے کا اپنے طور پر ضرور جائزہ لےگا لیکن چونکہ ایک جرم میں ایک بار سزا ہوچکی ہے لہٰذا اس کی توثیق تو کی جاسکتی ہے لیکن یہ نہیں ہوسکتا ہے کہ ان پر مزید دو تین ماہ کے لیے پابندی عائد کر دی جائے۔

ذکاء اشرف نے کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کا میڈیکل بورڈ بھی عبدالرحمن کی رپورٹس کا جائزہ لےگا اور قواعد وضوابط کے مطابق اس پر اگر ضروری ہوا تو قدم اٹھائے گا۔

واضح رہے کہ یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ پاکستانی کرکٹرز مبینہ طور پر اس قسم کے واقعات میں ملوث پائے گئے ہوں۔

سنہ انیس سو بانوے میں ویسٹ انڈیز کے دورے میں وسیم اکرم، وقار یونس، مشتاق احمد اور عاقب جاوید گرینیڈا کے ساحل پر مبینہ طور پر نشہ آور شے کے استعمال پر پکڑے گئےتھے۔

محمد آصف دو بار ڈوپنگ کی زد میں آچکے ہیں پہلی بار وہ شعیب اختر کے ساتھ اس میں ملوث پائے گئے اور دوسری مرتبہ آئی پی ایل کے دوران ان کا ڈوپ ٹیسٹ مثبت پایا گیا تھا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔