ٹونی گریگ پھیپھڑوں کے کینسر میں مبتلا

آخری وقت اشاعت:  اتوار 21 اکتوبر 2012 ,‭ 13:09 GMT 18:09 PST

ٹونی گریگ کمنٹری کے مخصوص انداز کی وجہ سے شائقین کرٹ میں مقبول ہیں

انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور مقبول کمنٹیٹر ٹونی گریک پھیپھڑوں کے کینسر میں مبتلا ہو گئے ہیں۔

ٹونی گریک نے آسٹریلوی اخبار سنڈے ٹیلی گراف سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ’ انہیں زندگی میں کئی نشیب و فراز کا سامنا کرنا پڑا اور اب یہ ایک نیا ہے۔‘

چھیاسٹھ سالہ ٹونی گریگ کی آئندہ ہفتے ایک سرجری کے ذریعے پھیپھڑوں سے نمونہ حاصل کیا جائے گا تاکہ اندازہ لگایا جا سکے کہ کینسر کس حد تک ہے۔

جنوبی افریقہ میں پیدا ہونے والے ٹونی گریک نے سنہ انیس سو بہّتر سے ستتر تک انگلینڈ کی طرف سے اٹھاؤن ٹیسٹ میچ کھیلے اور ان میں سے چودہ میں ٹیم کی قیادت کی۔

کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کے بعد کمنٹری شروع کی اور اپنے مخصوص سٹائل کی وجہ سے مقبول ہوئے۔

ٹونی گریک کو اس وقت کینسر کے عارضے کے بارے میں معلوم ہوا جب وہ گزشتہ ماہ پاکستان اور آسٹریلیا کے مابین ہونے والی ٹی ٹوئنٹی سیریز میں کمنٹری کر رہے تھے۔

ٹونی گریک کے مطابق وہ اور ان کی اہلیہ ویون باکسنگ دستانے پہننے جا رہے ہیں اور اس کا اس طرح سے ڈٹ کا مقابلہ کریں گے کہ پہلے کسی کا نہیں کیا ہو گا۔

ٹونی گریگ نے جب انیس سو بہّتر میں آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ میں پہلی بار انگلینڈ کرکٹ ٹیم میں شامل ہوئے تو اس وقت ٹیم کے سب سے لمبے قد کے کھلاڑی تھے۔

ٹونی گریگ دائیں ہاتھ سے بلے بازی کرتے تھے اور عام طور پر آف سپن بالنگ کراتے تھے۔ انہوں نے ٹیسٹ میچوں میں تین ہزار پانچ سو ننانوے رنز بنائے جس میں آٹھ سنچریوں بھی شامل ہیں اور ایک سو اکتالیس وکٹیں حاصل کیں۔ انہوں سنہ انیس سے پچہتر میں مائیکل ڈینس کی جگہ ٹیم کی قیادت سونپی گئی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔