کرکٹ ویزا پالیسی مایوس کن ہے،سابق کرکٹرز

آخری وقت اشاعت:  پير 12 نومبر 2012 ,‭ 15:04 GMT 20:04 PST

سابق کپتان معین خان کا کہنا ہے کہ کرکٹ ویزے کو اسپانسرشپ سے مشروط کرنے کا فیصلہ مایوس کن ہے۔

سابق پاکستانی کرکٹرز نے بھارتی کرکٹ ویزا پالیسی کو مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس سے بڑی تعداد میں پاکستانی شائقین دونوں ملکوں کی روایتی کرکٹ دیکھنے سے محروم ہوجائیں گے۔

واضح رہے کہ بھارتی وزارت داخلہ نے فیصلہ کیا ہے کہ آئندہ ماہ بھارت میں پاکستانی ٹیم کے دورے کے لیے صرف انہی شائقین کو ویزا جاری کیا جائے گا جنہیں کوئی بھارتی سپانسر کرے گا۔

سابق کپتان انضمام الحق نے بی بی سی کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ اگر اس فیصلے کا مقصد بھارت جانے والے پاکستانی شائقین کی وطن واپسی کو یقینی بنانا ہے تو اس کے لیے کوئی دوسرا راستہ اختیار کیا جا سکتا ہے۔

انضمام الحق نے کہا کہ ’جن شہروں میں میچز ہوں گے وہیں کے ویزے جاری کیے جا سکتے ہیں اور بھارتی حکام ان میچوں کے بعد پاکستانی شائقین کی واپسی کو یقینی بنا سکتے ہیں‘۔

انہوں نے کہا کہ ’ہر کوئی بھارتی سپانسر حاصل نہیں کر سکتا اس صورت میں شائقین کی بہت بڑی تعداد بھارت نہیں جا سکے گی‘۔

"دونوں طرف کے لوگ کرکٹ کے دیوانے ہیں اور سخت پالیسیاں بنا کر انہیں دنیا کی سب سے مقبول کرکٹ سے محروم رکھنا درست نہیں ہے"

باسط علی

انضمام الحق نے کہا کہ جب وہ کپتان تھے تو پاکستان اور بھارت میں کھیلی گئی سیریز میں شائقین کا جوش وخروش دیکھنے سے تعلق رکھتا تھا۔ درحقیقت دونوں ملکوں کے عوام کے ایک دوسر ے سے ملنے سے بھی تعلقات میں بہتری آتی ہے۔

سابق کپتان معین خان کا کہنا ہے کہ کرکٹ ویزے کو سپانسرشپ سے مشروط کرنے کا فیصلہ مایوس کن ہے۔

انہوں نےکہا کہ ’دونوں ملکوں کے درمیان کرکٹ روابط کی بحالی خوش آئند ہے لہٰذا شائقین کے لیے آسانیاں فراہم کرنے کی بھی ضرورت ہے‘۔

سابق ٹیسٹ کرکٹر باسط علی کا کہنا ہے کہ ویزے کی شرائط اگر بھارتی شائقین پر بھی عائد کی جائیں تو وہ انہیں بھی قابل قبول نہیں ہونگی۔

بقول باسط علی ’دونوں طرف کے لوگ کرکٹ کے دیوانے ہیں اور سخت پالیسیاں بنا کر انہیں دنیا کی سب سے مقبول کرکٹ سے محروم رکھنا درست نہیں ہے‘۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔