پاکستانی شائقین کے لیے تین ہزار ویزے

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 30 نومبر 2012 ,‭ 09:04 GMT 14:04 PST
بھارت اور پاکستان کی کرکٹ ٹیموں کے کپتان

بھارت اور پاکستان کی کرکٹ ٹیمیں تقریبا پانچ برس کے وقفے کے بعد بھارتی میدان پر کرکٹ کھیلے گی

بھارتی حکومت نے دسمبر میں انڈیا اور پاکستان کے درمیان کرکٹ سیریز کے لیے پاکستان کے تین ہزار کرکٹ شائقین کو بھارت کا ویزا دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

پاکستان کی کرکٹ ٹیم بائیس دسمبر کو بھارت پہنچےگی اور پچیس دسمبر سے چھ جنوری تک بھارت میں کرکٹ سیریز کھیلے گی۔

انگریزی اخبار ’ٹائمز آف انڈیا‘ کے مطابق جو پاکستان شائقین بھارت میں میچ دیکھنے کے لیے ویزا پانا چاہتے ہیں انہیں اپنی ویزا کی درخواست کے ساتھ اپنے سفر کی واپسی کا ٹکٹ، ہوٹل کی بکنگ اور میچ کی ٹکٹوں کی نقل لگانی ہوگی۔

اخبار کے مطابق وزارتِ داخلہ کے ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ کسی بھی پاکستانی شائقین کو واہگہ کے ذریعے پیدل بھارت میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوگی۔

وزارت داخلہ کے ذرائع کے مطابق سب سے زیادہ یعنی ایک ہزار ویزے دلی میں کھیلے جانے والے میچ کے لیے جاری کیے جائیں گے وہیں بنگلور، چنئی، احمدآباد اور کولکتہ میں کھیلے جانے والے میچوں کے لیے پانچ، پانچ سو ویزا جاری کی جائیں گی۔

اطلاعات کے مطابق پاکستانی شائقین کو ایک وقت میں ’ملٹی سٹی ویزا‘ اس شرط پر ملے گا کہ وہ لازماً ان شہروں میں کھیلے جانے والے میچ دیکھنے جائیں۔

بھارتی وزارتِ داخلہ کے ایک اہلکار نے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا کہ ’ہم تین ہزار پاکستانی کرکٹ شائقین کو بھارت میں میچ دیکھنے کے لیے ویزا دے رہے ہیں۔ یہ پہلی بار ہے جب ایک ساتھ ہم نے اتنی بڑی تعداد میں ویزا دینے کا فیصلہ کیا ہے‘۔

دونوں ملکوں کے درمیان تقریباً پانچ برس کے وقفے کے بعد کرکٹ تعلقات بحال ہوں گے۔ اس سے قبل دونوں ممالک کے درمیان آخری بار دو ہزار سات آٹھ میں بھارت میں ہی سیریز کھیلی گئی تھی۔

دونوں ممالک کے درمیان کرکٹ کے رشتے دو ہزار آٹھ میں ممبئی حملوں کے بعد معطل ہوگئے تھے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔